امریکی صدر ٹرمپ کا ترکی کے خلاف پابندیاں عائد کرنے کا عندیہ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی پر بڑے پیمانے پر پابندیاں عائد کرنے کا عندیہ دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ پیغام میں لکھا ہے کہ عنقریب ترکی پر بڑے پیمانے پر پابندیاں عائد کردی جائیں گی۔اطلاعات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترک فوج کی شام کے شمالی علاقے میں آپریشن کے تناظر میں ایک بار پھر کڑی اور سخت پابندیاں عائد کرنے کی دھمکی دی ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ ترکی پر کڑی پابندیاں عائد کی جارہی ہیں، کیا یہ لوگ چاہتے ہیں کہ ہم نیٹو رکن ترکی کے ساتھ کھلی جنگ کریں ؟ ساتھ ہی انہوں نے امید ظاہر کی کہ کبھی ختم نہ ہونے والی جنگیں ختم ہوجائیں گی۔

 ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں مقامی میڈیا میں نشر ہونے والی اُن رپورٹوں کو مسترد کیا  جس میں امریکہ کے ایک اور جنگ میں کودنے کا واضح اشارہ دیا گیا تھا۔ امریکی صدر نے وضاحت کی کہ ہم خود کو ایک ایسی جنگ میں جھونکنا نہیں چاہتے جس کے متحارب گروہ ایک دوسرے سے دو صدیوں سے جنگ کر رہے ہوں۔

صدر ٹرمپ نے یورپی ممالک کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے لکھا کہ یورپی ممالک کے پاس کردوں کی قید میں اسیر اپنے ملک سے تعلق رکھنے والے داعش دہشت گردوں کو تحویل میں لینے کا نادر موقع ہے لیکن وہ ایسا نہیں کر رہے ہیں۔

امریکی صدر نے لکھا کہ یورپی ممالک داعش سے چھٹکارا تو چاہتے ہیں لیکن اس کے لیے کوئی قیمت ادا کرنا نہیں چاہتے بلکہ وہ چاہتے ہیں کہ خود محفوظ رہیں اور امریکہ قربانی دے ۔

اپنی ایک اور ٹویٹ میں ڈونلڈ ٹرمپ نے لکھا کہ یورپی ممالک سمجھتے ہیں کہ کرد خود سے داعش دہشت گردوں کو چھوڑ رہے ہیں تاکہ عالمی قوتوں کو متوجہ کیا جا سکے۔ اگر ایسا ہے بھی تو مفرور داعش جنگجوؤں کو ترکی یا یورپی ممالک انہیں اپنے بارڈر پر پکڑ سکتے ہیں۔

News Code 1894564

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =