مصری صدر السیسی کے خلاف مظاہرے شروع ہوگئے

مصر کے تحریر اسکوائر پر مصری صدر السیسی کے خلاف مظاہرے شروع ہوگئے ہیں مظاہرین صدر السيسی سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے مصر الیوم کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مصر کے تحریر اسکوائر پر مصری صدر السیسی کے خلاف مظاہرے شروع ہوگئے ہیں مظاہرین صدر السيسی سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق مصر کے دارالحکومت قاہرہ سميت کئی ديگر شہروں ميں جمعے کی رات سينکڑوں افراد نے صدر السیسی کی حکومت اور بدعنوانی کیخلاف مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہرے کيے۔ اس سلسلے میں سب سے بڑا اجتماع تحریر اسکوائر میں ہوا۔ مظاہرین نے پلے کارڈرز اور بینرز اُٹھا رکھے تھے جس میں صدر السیسی سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ درج تھا، اس موقع پر شدید نعرے بازی کی گئی اور مقررین نے اپنی تقاریر میں حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا جب کہ سابق صدر محمد مرسی کی زیر حراست موت کی تحقیقات اور ذمہ داروں کیخلاف سخت تادیبی کارروائی کا مطالبہ بھی کیا گیا۔ فوجی حکمراں السیسی کے خلاف یہ پہلے عوامی مظاہرے تھے جسے روکنے کے لیے ریاستی طاقت کا استعمال کیا گیا، پولیس اور دیگر سیکیورٹی فورسز نے مظاہرین کو منشتر کرنے کے لیے آنسو گیس کی شیلنگ کی اور ہوائی فائرنگ کی۔ مظاہرین اور سیکیورٹی فورسز کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئیں۔ دوسری جانب صدر کے حامیوں نے مظاہروں کو کمزور اور ناکام قرار دیا ہے تاہم صدر السیسی نے مظاہروں کا زور توڑنے کے لیے کریک ڈاؤں آپریشن کا آغاز کردیا ہے، سیکڑوں مظاہرین کو گرفتار کیا جا چکا ہے جب کہ مخالف جماعتوں کے رہنماؤں اور کارکنان کے گھروں پر چھاپے مارے جا رہے ہیں۔ اپوزیشن رہنما پہلے ہی جیلوں میں بند ہیں۔

News Code 1893947

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 2 =