ہانگ کانگ میں ایک بار پھر عوامی احتجاج کا سلسلہ شروع

ہانگ کانگ میں عوام کی بڑی تعداد نے ایک مرتبہ پھر ملک کے چیف ایگزیکٹیو کیری لام کے استعفے اور پولیس کی جانب سے مظاہرین پر تشدد کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت مخالف شدید احتجاج شروع کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہانگ کانگ میں عوام کی بڑی تعداد نے ایک مرتبہ پھر ملک کے چیف ایگزیکٹیو کیری لام کے استعفے اور پولیس کی جانب سے مظاہرین پر تشدد کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت مخالف شدید احتجاج شروع کردیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق شاتن کے علاقے میں 10 ہزار سے زائد افراد نے ملک میں شفاف انتخابات کا مطالبہ کرتے ہوئے مارچ کیا اور آزاد ہانگ کانگ کا مطالبہ دہرایا۔

مظاہرین مطالبہ کررہے تھے کہ مجرموں کی حوالگی کے متنازع قانون کے خلاف ہونے والے مظاہروں کے دوران عوام پر پولیس کے تشدد کے حوالے سے تفتیش کی جائے جبکہ کئی افراد نے پلے کارڈز بھی اٹھا رکھے تھے جس میں پولیس کے خلاف نعرے درج تھے۔کئی مظاہرین نے پلے کارڈز میں ہانگ کانگ کے تحفظ کے نعرے درج کر رکھے تھے۔

پولیس کی موجودگی میں مظاہرین چیف ایگزیکٹیو کے خلاف نعرے لگا رہے تھے اور کہہ رہے تھے کہ وہ ہانگ کانگ کو 1997 میں چین کے حوالے کرنے کے موقع پر کیے گئے آزادی اور خود مختاری کے وعدے کی خلاف ورزی کررہی ہیں۔ہانگ کانگ میں کئی مظاہرین نے امریکی یا نوآبادیات دور کے ہانگ کانگ کے پرچم بھی اٹھا رکھے تھے۔

News Code 1892155

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 14 =