محبوبہ مفتی کی کشمیر کو سی پیک کا حصہ بنانے کی تجویز

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہکشمیر کو سی پیک کا حصہ بنا کر کشمیریوں کو آزادی دی جانی چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ہندوستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے ہندوستانی ٹی وی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہکشمیر کو سی پیک کا حصہ بنا کر کشمیریوں کو آزادی دی جانی چاہیے۔ کشمیر محبوبہ مفتی نے کہا کہ اگر کشمیر مسئلہ نہیں ہے تو پھر ہماری لاکھوں کی تعداد میں فوج وہاں کیا کر رہی ہے، پاکستان اور مجاہدین ہمارے لیے مسئلہ ہیں لیکن ہمیں انہیں مسئلے کے حل کا حصہ بنانا ہوگا۔ بھارت کی پاکستان کے ساتھ دشمنی کا سب سے زیادہ خمیازہ کشمیریوں کو بھگتنا پڑتا ہے جو کشمیر کے مسئلے کو سمجھتے ہیں وہ جانتے ہیں کہ اگر کشمیر میں امن بحال کرنا ہے تو پاکستان کو مذاکرات کا حصہ بنانا ہوگا۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ کشمیر کے معاملے پر سوئی اٹکی ہوئی ہے اور وہ اسی صورت چلے گی جب آپ راستے کھولیں گے، کشمیر کو سی پیک کا حصہ بنایا جائے۔کشمیری آزادی مانگتے ہیں اور انہیں آزادی دی جائے، ان کے چین کے ساتھ بھی راستے کھولے جائیں اور تمام سارک ممالک کا ہیڈ کوارٹر بنایا جائے۔ کشمیر میں سارک ممالک کے ہیڈ کوارٹرز اور بینکس ہونے چاہئیں۔ مسئلہ کشمیر کے حل کے حوالے سے ہندوستان کے سابق وزیر اعظم واجپائی کی کوششوں کے بارے میں اظہار خیال کرتے ہوئے محبوبہ مفتی نے کہا کہ واجپائی اور مودی میں زمین اور آسمان کا فرق ہے، جب واجپائی نے کچھ کرنا ہوتا تھا تو وہ انتخابات کا انتظار نہیں کرتے تھے جبکہ مودی ہمیشہ انتخابات کے بارے میں سوچتے ہیں۔ واجپائی کے علاوہ کسی نے بھی کشمیر کا مسئلہ حل کرنے کے بارے میں سنجیدگی سے نہیں سوچا۔ وہ کشمیر کا مسئلہ حل کرنے کے انتہائی قریب پہنچ چکے تھے لیکن 2004 کا الیکشن ہار گئے جس کے بعد اس مسئلے پر کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔

News Code 1886549

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 6 =