سعودی عرب کے بعد ترکی نے بھی اسلامی فوج بنانے کا اعلان کردیا

سعودی عرب نے نام نہاد اسلامی فوج بنانے کے امریکی منصوبہ پر کام کرتے ہوئے پاکستانی فوج کے سابق سربراہ جنرل راحیل شریف کو اس فوج کا سربراہ مقرر کیا لیکن اب ترکی نے بھی اسلامی ممالک کی متحدہ فوج بنانے کا اعلان کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب نے نام نہاد  اسلامی فوج بنانے کے امریکی منصوبہ پر کام کرتے ہوئے پاکستانی فوج کے سابق سربراہ جنرل راحیل شریف کو اس فوج کا سربراہ مقرر کیا لیکن اب ترکی نے بھی اسلامی ممالک کی متحدہ فوج بنانے کا اعلان کیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق ترکی نے 57 اسلامی ممالک کو ساتھ ملا کر دنیا کی سب سے بڑی فوج بنانے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ اس سے قبل سعودی عرب بھی اسی قسم کی فوج بنانے کے منصوبے پر گامزن ہے۔ ترک ذرائع کے مطابق ترکی نے57 اسلامی ممالک کو ساتھ ملا کر دنیا کی سب سے بڑی فوج بنانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

ترک ذرائع کے مطابق دنیا بھر کی سب سے بڑی مذکورہ فوج کا نام " اسلامی فوج "  رکھا جائے گا ۔ ترک اخبار کے مطابق ترکی نےاسلامی تعاون تنظیم کے 57 رکن ممالک سے مطالبہ کیاہے کہ وہ ایسی بڑی اسلامی فوج بنائیں۔ جو بیت المقدس کو اسرائیل کے قبضہ سے آزاد کرائے اور اسرائیل پر حملہ کرکے اس کا کام تمام کردے۔ ترکی نے اس فوج کی تعداد 50 لاکھ بتائی ہے۔ باخبـر ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ ترکی پہلے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرکے عملی طور پر ثابت کرے کہ وہ اسرائیل کے خلاف ایسا کام کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ مسلم ذرائع کے مطابق وہ مسلم ممالک جہاں امریکہ اور اسرائیل کی اشاروں پر حکومتیں اور بادشاہتیں بنتی اور بگڑتی ہیں ان ممالک کے حکمراں  در حقیقت اسرائیلی ہیں۔ سعودی عرب نے اسرائیل کے ساتھ اپنے خفیہ تعلقات کو اب آشکار کرنا شروع کردیا ہے اور اس نے اپنی فضائی حدود کو اسرائیل کے لئے کھول دیا ہے۔ عرب ذرائع ابلاغ اس کو سعودی عرب کی اسلام اور مسلمانوں کے ساتھ بہت بڑی خیانت قراردے رہے ہیں۔

News Code 1879563

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =