امریکہ کے ساتھ مذاکرات مکمل طور پر ممنوع/ ایرانی عوام کے مفادات کے تحفظ پر تاکید

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے امریکہ کے ساتھ مذاکرات کو مکمل طور پر ممنوع قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کو امریکہ اور اسرائیل کے اشاروں پر ایران کے پرامن ایٹمی پروگرام کے خلاف سازش اور خلاف ورزی کرنے کی اجازت نہیں دی جائےگی۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے امریکہ کے ساتھ مذاکرات کو مکمل طور پر ممنوع قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کو امریکہ اور اسرائیل کے اشاروں پر ایران کے پرامن ایٹمی پروگرام کے خلاف سازش اور خلاف ورزی کرنے کی اجازت نہیں دی جائےگی۔

ایرانی اسپیکر محمد باقر قالیباف نے کہا کہ ایران مذاکرات کا حامی اور طرفدار ہے لیکن امریکہ کے ساتھ مذاکرات ایران کے لئے نقصاندہ اور مضرثابت ہوئے ہیں امریکہ قابل اعتماد ملک نہیں ، امریکہ نے ہمیشہ ایرانی عوام کے مفادات کو نقصان پہنچایا ہے۔

محمد باقر قالیباف نے کہا کہ امریکہ اور بعض یورپی ممالک نے گذشتہ چند دنوں میں اپنی اصلیت ، دشمنی اور اپنے ناپاک عزائم کا ایک بار پھر ثبوت پیش کرتے ہوئے ایران کے پرامن ایٹمی پروگرام کے خلاف غیر معتبر اطلاعات کو بہانہ بنا کر بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی میں ایران کے خلاف قرارداد منظور کی ہے۔ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ امریکہ اور یورپی ممالک ایرانی عوام کی ترقی ، پیشرفت اور خوشحالی کے خلاف ہیں اور ایران کے بھر پور تعاون کے باوجود ایرانی عوام کے حقوق اور مفادات کو پامال کرنے کی تلاش و کوشش جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ ہم کسی کو ایرانی عوام کے حقوق پامال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے اور ہم ایرانی عوام کے حقوق کے تحفظ کے سلسلے میں استقامت اور پائداری کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔

محمد باقر قالیباف نے بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کی قرارداد کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ قرارداد اسرائیل اور امریکہ کی اطلاعات پر ایران کے خلاف پیش کی گئی ہے اور ہم اس قرارداد کو مردود سمجھتے ہیں۔ اس قرارداد نے امریکہ اور یورپی ممالک کی ایران کے بارے میں دشمنی اور عداوت کو مزید نمایاں کردیا ہے۔

News Code 1901043

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 2 =