بھارتی وزیر اعظم مودی کے اسرائیلی جاسوس کمپنی کے ساتھ تعلقات کا انکشاف

بھارتی شہریوں نے وزیراعظم نریندر مودی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اسرائیلی جاسوس کمپنی سے اپنے اور اپنی حکومت کے تعلقات کو منظرعام پر لائیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی شہریوں نے وزیراعظم نریندر مودی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اسرائیلی جاسوس کمپنی سے اپنے اور اپنی حکومت کے تعلقات کو منظرعام پر لائیں۔ اطلاعات کے مطابق بھارتی صحافیوں، دانشوروں اور سماجی کارکنوں پر مشتمل 19 شہریوں کے گروپ نے نریندر مودی کی حکومت کے نام کھلا خط لکھا ہے۔ خط میں وزیراعظم نریندر مودی کی حکومت سے اسرائیلی جاسوس کمپنی سے تعلقات پر کھل کر اظہار خیال کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ بھارتی حکومت بتائے کہ " کیا آپ نے ہماری نگرانی بڑھادی ہے" ؟

واٹس ایپ نے جاسوسی کرنے پر اسرائیلی کمپنی این ایس او پر مقدمہ کر رکھا ہے، جس میں الزام لگایا گیا ہے کہ اس نے جاسوسی میں مختلف حکومتوں کی مدد کرنے کے لیے دنیا بھر میں اس کے صارفین کے موبائل فون ہیک کیے ہیں۔

واٹس ایپ حکام کے مطابق ایک اسرائیلی کمپنی نے 4 براعظموں میں 1400 صارفین کے موبائل فون ہیک کیے جن میں سفارتکار، سیاستدان، صحافی اور سینئر حکومتی عہدیداران شامل ہیں۔واٹس ایپ کی جانب سے سان فرانسسکو کی فیڈرل کورٹ میں دائر مقدمے میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ این ایس او اسرائیلی حکومت کے 20 ممالک میں جاسوسی کے عمل میں سہولت کاری کررہی ہے۔ بھارتی وزیر اعظم مودی اور اس کی حکومت کے بھی اس کمپنی کے ساتھ قریبی تعلقات ہیں۔جس پر بھارتی شہریوں نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

News Code 1895280

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 3 =