سعودی عرب کو  تیل کا ایک قطرہ بھی فروخت نہیں کیا جائےگا

عراقی پارلیمنٹ کے ایک نمائندے نے اعلان کیا ہے کہ عراق کی طرف سے سعودی عرب کو تیل کا ایک بیرل بھی فراہم نہیں کیا جائےگا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے النہرین کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ  عراقی پارلیمنٹ کے نمائندے حسن الکعبی نے اعلان کیا ہے کہ عراق کی طرف سے سعودی عرب کو تیل کا ایک قطرہ بھی فراہم نہیں کیا جائےگا۔ حسن الکعبی نے کہا کہ عراق سعودی عرب کو ایک بیرل تیل بھی فراہم نہیں کرےگا کیونکہ عراق خطے میں سعودی عرب کی شرارت بازی سے دور ہے۔ سعودی عرب نے پورے خطے کے امن کو داؤ پر لگا دیا ہے۔ حسن الکعبی نے کہا کہ سعودی عرب نے یمن کے نہتے عربوں پر گذشتہ پانچ سال سے بہیمانہ اور ظالمانہ جنگ مسلط کررکھی ہے یمن کے بنیادی ڈھانچے کو اس نے ہوائی حملوں میں  تباہ کردیا ہے اور سعودی عرب تیل کی تنصیبات پر حملہ یمنیوں کا دفاعی اوربنیادی حق ہے سعودی عرب اس سلسلے میں اقوام متحدہ میں یمن کے خلاف شکایت کرسکتا ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب نے اس سے قبل عراق کو تیل فراہم کرنے کی درخواست دی تھی ۔ یمنی فورسز کے حالیہ حملے کے نتیجے میں سعودی عرب کی تیل کی پیدوار بڑے پیمانے پر متاثر ہوئی ہے اور سعودی عرب کی 55 فیصد سے زائد تیل کی سپلائی متوقف ہوگئی ہے۔ تیل کی پیداوار پر فخر اور ناز کرنے والا سعودی عرب تیل بھیک مانگنے پر مجبور ہوگیا ہے۔

News Code 1893906

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 8 =