یمنی فورسز کے ڈرون حملوں میں سعودی عرب کی تیل کی سپلائی بری طرح متاثر

سعودی عرب کے وزیر توانائی عبدالعزیز بن سلمان نے کہا ہےکہ یمنی ڈرون حملوں کے نتیجے میں 57 لاکھ بیرل یومیہ خام تیل کی سپلائی متاثر ہوئی ہے، جبکہ اوپیک والے اعدادو شمار کے مطابق سعودی عرب کی یومیہ خام تیل کی پیداوار 98 لاکھ بیرل ہے ۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے وزیر توانائی عبدالعزیز بن سلمان نے کہا  ہےکہ یمنی ڈرون حملوں کے نتیجے میں 57 لاکھ بیرل یومیہ خام تیل کی سپلائی متاثر ہوئی ہے، جبکہ اوپیک والے اعدادو شمار کے مطابق سعودی عرب کی یومیہ خام تیل کی پیداوار 98 لاکھ بیرل ہے ۔ آرامکو آئل فیلڈ پر یمنی ڈرون حملوں کے نتیجے میں سعودی عرب کی خام تیل کی پیداوار نصف رہ گئی ہے جو کہ پوری دنیا کی سپلائی کا پانچ فیصد ہے۔ اس صورتحال میں امریکی صدر ٹرمپ نے ولی عہد محمد بن سلمان کو تعاون کی پیشکش بھی کی ہے ۔ آرامکو آئل فیلڈ پر یمنی ڈرون حملوں کے نتیجے میں سعودی عرب کی خام تیل کی پیداوار نصف رہ گئی ہے جو کہ پوری دنیا کی سپلائی کا پانچ فیصد ہے جس کی ذمہ داری حوثی باغیوں نے قبول کی ہے ، اس صورتحال میں امریکی صدر ٹرمپ نے ولی عہد محمد بن سلمان کو تعاون کی پیشکش بھی کی ہے ۔ اطلاعات کے مطابق یمنی فورسز اور قبائل  نے ڈرون حملوں کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے بیان جاری کیاہے کہ آرامکو آئل فیلڈ زکے 15 تیل کے کنوؤں پر 10 ڈرونز نے حملہ کیا تیل کے کنویں سعودی عرب کے شہر ابقیق اور الخریص میں  واقع ہیں ۔سعودی عرب کے وزیر توانائی عبدالعزیز بن سلمان نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ حملوں کے نتیجے میں 57 لاکھ بیرل یومیہ خام تیل کی سپلائی متاثر ہوئی ہے ۔ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ " اوپیک "  کے اگست میں جاری ہونے والے اعدادو شمار کے مطابق سعودی عرب کی یومیہ خام تیل کی پیداوار 98 لاکھ بیرل ہے ۔

یمنی فوج کے ترجمان یحیی سریع نے کہا ہے کہ یمن پر مسلط کردہ جنگ میں سعودی عرب نے سنگین اور بھیانک جرائم کا ارتکاب کیا ہے اور سعودی عرب کو اس کا تاوان ادا کرنا پڑےگا۔

News Code 1893774

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 3 =