ایران کا مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں تیسرے گام کا آغاز/سنٹریفیوجز آئی آر 6 کو گيس کی فراہمی

اسلامی جمہوریہ ایران کے جوہری ادارے کے ترجمان نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں تیسرے گام کا آغاز کردیا ہے اور اس مرحلے میں سنٹریفیوجز آئی آر کو گیس کی فراہمی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے جوہری ادارے کے ترجمان بہروز کمالوندی نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں تیسرے گام کا آغاز کردیا ہے اور اس مرحلے میں سنٹریفیوجز آئی آر6 کو گیس کی فراہمی شروع کردی ہے۔ انھوں نے کہا کہ یورپی ممالک کی طرف سے اپنے وعدوں پر عمل نہ کرنے کی وجہ سے تعاون میں کمی کے تیسرے مرحلے کا آغاز کردیا ہے امریکہ پہلے ہی مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوگیا اور یورپی ممالک نے بھی مشترکہ ایٹمی معاہدے میں کئے گئے اپنے وعدوں پر عمل نہیں کیا اور اس صورت میں ایران یکطرفہ طور پر مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل کرنے کا پابند نہیں ہے لہذآ ایران نے تیسرے مرحلے میں ایٹمی ریسرچ اور تحقیقات کا آغاز کردیا ہے اور اس سلسلے میں سنٹریویوجز آئی آر 6 کو گیس کی فراہمی کا عمل بھی شروع کردیا گیا ہے  اور تمام اقدامات ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے حکم کے بعد انجام دیئے گئے ہیں۔

ایران کے جوہری ادارے کے ترجمان نے کہا کہ ایران کی یورینیم افزودگی کی مقدار ملک کی ضرورت کے مطابق اور مقدار میں ہونی چاہیے ۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے ایران کے جوہری ادارے کی بھر پور حمایت کی ہے اور جوہری صنعت کے فروغ میں رہبر معظم انقلاب اسلامی کی حمایت کا سلسلہ جاری ہے۔ کمالوندی نے کہا کہ ایران کے پر امن ایٹمی پروگرام پر بین الاقوامی جوہری ادارے کی نگرانی کا سلسلہ بھی جاری رہےگا۔

News Code 1893560

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 14 =