امریکہ کے سابق صدر نے افریقی وفد کو بندر سے تعبیر کیا تھا

امریکی میگزین میں شائع ایک مضمون میں کہا گیا ہے کہ حال ہی میں سامنے آنے والی ایک ٹیپ میں انکشاف ہوا ہے کہ امریکہ کے سابق صدر رونالڈ ریگن نے اقوام متحدہ میں افریقہ کے وفود کو " بندر" سے تعبیر کیا تھا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بی بی سی کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی میگزین میں شائع ایک مضمون میں کہا گیا ہے کہ حال ہی میں سامنے آنے والی ایک ٹیپ میں انکشاف ہوا ہے کہ امریکہ کے سابق صدر رونالڈ ریگن نے اقوام متحدہ میں افریقہ کے وفود کو " بندر" سے تعبیر کیا تھا۔ اطلاعات کے مطابق رونالڈ ریگن نے 1971 میں اس وقت کے امریکی صدر رچرڈ نکسن سے ٹیلی فون پربات کرتے ہوئے اس طرح کے جملے ادا کیے تھے۔

رونالڈ ریگن اس وقت کیلیفورنیا کے گورنر کی حیثیت سے فرائض انجام دے رہے تھے اور اقوام متحدہ میں افریقی نمائندوں کی جانب سے امریکہ کے خلاف ووٹ دینے پر غصے میں تھے۔

رپورٹ کے مطابق چین اور تائیوان کو تسلیم کرنے کے لیے ووٹنگ کے دوران افریقی ملک تنزانیا کے نمائندوں نے امریکہ کے خلاف ووٹ دینے کے بعد رقص کرتے ہوئے خوشی کا اظہار کیا تھا۔ ریگن تائیوان کے حامی تھے اور ووٹنگ میں ناکامی کے بعد صدر سے اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے افریقی وفد کو بندر سے تعبیر کیا تھا ۔ اس وقت کے امریکی صدر نکسن کو اپنے ایک گورنر کی جانب سے اس طرح کی تضحیک آمیز گفتگو سننے کے بعد مسکراتے ہوئے سنا جاسکتا ہے جنہوں نے 1974 میں صدارت چھوڑ دیا تھا۔

News Code 1892597

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 14 =