پاکستان کے سابق صدر کی بہن 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

پاکستان کی احتساب عدالت نے جعلی اکاوٴنٹس کیس میں سابق صدرآصف زرداری کی ہمشیرہ اور رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور کو 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کی احتساب عدالت نے جعلی اکاوٴنٹس کیس میں سابق صدرآصف زرداری کی ہمشیرہ اور رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور کو 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا ہے۔ قومی احتساب بیورو (نیب) نے جعلی اکاوٴنٹس اور میگا منی لانڈرنگ کیس میں پیپلز پارٹی کی رہنما فریال تالپور کو احتساب عدالت اسلام آباد میں پیش کرکے ان کے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔

نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر نے عدالت سے درخواست کی کہ فریال تالپور سے تفتیش کے لیے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کیا جائے، فریال تالپور جعلی اکاوٴنٹس کیس میں نامزد ہیں اور ان  پر کرپشن کا الزام ہے۔احتساب عدالت نے فریال تالپور کو 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کرکے 24 جون کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔ نیب نے فریال تالپور کے گھر کو سب جیل قرار دے کر ان کی رہائش گاہ میں ہی نظربند رکھا ہے۔ فریال تالپور نے احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا میری سیاسی گرفتاری ہے، میں نے خود کو اللہ کے حوالے کیا ہے، اللہ خیر کرے گا رب کی رضا بڑی ہے، میں مقدمات کا سامنا کروں گی، گرفتاری میرے کیلئے کوئی نئی بات نہیں، میرے والد نے بھی مقدمات کا سامنا کیا ہے، میرے والد، خاوند اور بھائی جیل میں بھی رہے، میں ڈٹ کر کھڑی ہوں، میں نے سیاست کی ہے اور مشرف کے ٹرائل کا بھی سامنا کیا ہے۔ واضح رہے کہ پیر کے روز اسلام آباد ہائی کورٹ نے جعلی بینک اکاؤنٹس اور میگا منی لانڈرنگ کیس میں آصف زرداری اور فریال تالپور کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے نیب کو دونوں سیاسی رہنماؤں کو گرفتار کرنے کی اجازت دی تھی۔

News Code 1891384

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =