راولپنڈی میں پولیس اہلکاروں نے لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنادیا

پاکستان کے شہر روالپنڈی میں 3 پولیس اہلکاروں سمیت 4 ملزمان نے 22 سالہ لڑکی کو اغوا کے بعد اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکسپریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے شہر روالپنڈی میں 3 پولیس اہلکاروں سمیت 4 ملزمان نے 22 سالہ  لڑکی کو اغوا کے بعد اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔ اطلاعات کے مطابق راولپنڈی کے تھانہ روات میں ایک خاتون کی جانب سے 3 پولیس اہلکاروں سمیت 4 افراد کے خلاف مقدمہ درج کرایا گیا ہے ۔ جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ شیشوں پر سیاہ پردے لگی گاڑی میں سوار پولیس اہلکاروں نے  اسے ہاسٹل جاتے ہوئے گاڑی روک کر اغوا کیا۔ اسے گاڑی میں رات بھر گھماتے رہے اور ویران جگہ پر گاڑی میں ہی مبینہ زبردستی کا نشانہ بناتے رہے۔ ملزمان نے ناصرف 30 ہزار روپے اور طلائی زیورات چھین لیے بلکہ قبیح فعل کے بعد دوبارہ رابطہ رکھنے کے لئے اپنے فون نمبر بھی دیتے رہے۔

روات پولیس نے متاثرہ لڑکی کے بیان پر مقدمہ درج کرکے تفتیش کا آغاز کردیا ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ روات پولیس نے تینوں پولیس اہلکاروں سمیت چاروں ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے۔  پولیس اہلکاروں کے نام نصیر، راشد منہاس اور عظیم جب کہ عامر ان کا ساتھی ہے۔

News Code 1890615

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 1 =