سری لنکا میں حالیہ بم دھماکوں کا ماسٹر مائنڈ ہلاک

سری لنکا میں ایسٹر کے موقع پر 8 خود کش بم دھماکوں کے الزام میں انتہائی مطلوب وہابی داعشی دہشت گرد محمد ظہران کے شنگریلا ہوٹل دھماکے میں ہلاک ہونے کی تصدیق ہوگئی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے یورو نیوز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سری لنکا میں ایسٹر کے موقع پر 8 خود کش بم دھماکوں کے الزام میں انتہائی مطلوب وہابی داعشی دہشت گرد محمد ظہران کے شنگریلا ہوٹل دھماکے میں ہلاک ہونے کی تصدیق ہوگئی ہے۔اطلاعات کے مطابق صدر میتھری پالا نے ہنگامی پریس کانفرنس میں سری لنکا میں گرجا گھروں اور ہوٹلوں پر خود کش حملے کے ماسٹر مائنڈ محمد ظہران کے ہلاک ہونے کی تصدیق کردی ہے۔ سی سی ٹی وی فوٹیجز سے تصدیق ہوتی ہے کہظہران شنگریلا ہوٹل دھماکے میں ہلاک ہوا جہاں اس کے ساتھ ایک اور دہشت گرد الحام بھی موجود تھا۔ظہران مقامی وہابی دہشت گرد تنظیم التوحید کے مرکزی رہنماؤں میں سے تھا یہ تنظیم داعش سے منسلک تھی داعش کی جانب سے حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کے ایک دن بعد ایک ویڈیو ریلیز کی گئی جس میں ظہران کو دیگر 6 نقاب پوش وہابی دہشت گردوں کے ساتھ دیکھا جا سکتا ہے۔ اس ویڈیو میں صرف ظہران نے اپنا چہرہ نہیں چھپایا تھا۔

News Code 1890026

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 1 =