متحدہ عرب امارات نے برطانوی جاسوس کو رہا کردیا

مغرب نواز متحدہ عرب امارات کے حکمراں خلیفہ بن زاید النہیان نے صدارتی صوابدید کو استعمال کرتے ہوئے برطانوی جاسوس کی عمر قید کی سزا معطل کرتے ہوئے اسے آزاد کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزیرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مغرب نواز متحدہ عرب امارات کے حکمراں خلیفہ بن زاید النہیان نے صدارتی صوابدید کو استعمال کرتے ہوئے برطانوی جاسوس کی عمر قید کی سزا معطل کرتے ہوئے اسے آزاد کردیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق متحدہ عرب امارات میں دوسرے ملک کے لیے جاسوسی کے الزام میں عمر قید کی سزا پانے والے برطانوی طالب علم میتھیو ہیجز کی سزا معاف کردی گئی ہے۔متحدہ عرب امارات کے حکمراں خلیفہ زاید بن النہیان نے اپنی صدارتی صوابدید کو استعمال کرتے ہوئے 100 سے زائد اسیروں کی سزا معاف کرنے کا حکم نامہ جاری کیا۔ اس فہرست میں حیران کن طور پر 31 سالہ میتھیو ہیجز کا نام بھی شامل ہے۔ میتھیو ہیجز کی سزا کی معافی کا معاملہ عالمی دباؤ کا نتیجہ ہے، قبل ازیں متحدہ عرب امارات کے حکام نے میڈیا کو ملزم کے اقبالی بیان کی ویڈیو دکھائی تھی جس میں میتھیو ہیجز نے برطانوی خفیہ ایجنسی  ایم آئی 6 کا کیپٹن ہونے کا اعتراف کیا تھا۔واضح رہے کہ برطانوی طالب علم میتھیو ہیجز کو رواں برس مئی میں حراست میں لیا گیا تھا اور 21 نومبر کو جاسوسی کے الزام میں عمر قید کی سزا سنائی گئی تھی اور اب اسے مغرب نواز خلیفہ نے آزاد کردیا ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب اور خلیج فارس کک عرب ریاستوں پر امریکہ اور برطانیہ نواز حاکم حکمراں ہیں۔

News Code 1885959

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 11 =