ایوانکا ٹرمپ نے امریکی قوانین کی خلاف ورزی کا ارتکاب کیا

امریکی صدر ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ نے اہم سرکاری ای میلز کی ترسیل کے لیے اپنے ذاتی ای میل اکاؤنٹ کو استعمال کر کے امریکی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔

مہر خبررسان ایجنسی نےامریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی صدر ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ نے اہم سرکاری ای میلز کی ترسیل کے لیے اپنے ذاتی ای میل اکاؤنٹ کو استعمال کر کے امریکی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔ اطلاعات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا نے کئی سرکاری ای میلز بھیجنے کے لیے اپنا ذاتی ای میل اکاؤنٹ استعمال کیا جو کہ امریکہ کے صدارتی ریکارڈز ایکٹ کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

ایوانکا ٹرمپ نے ای میلز ٹرمپ کابینہ کے حکام، وائٹ ہاؤس کے مشیروں اور معاونین خصوصی کو بھیجیں اور اہم سرکاری فیصلوں سے آگاہ کیا۔ ایوانکا یہ تمام ای میلز صرف وائٹ ہاؤس کے ای میلز اکاؤنٹ سے بھیجنے کی مجاز تھیں۔

ایوانکا ٹرمپ امریکی صدر کی بیٹی ہونے کے علاوہ  بلا معاوضہ مشیر بھی ہیں تاہم یہ تمام ای میلز سرکاری ذمہ داریاں سنبھالنے سے قبل کی گئی تھیں۔ اس دانستہ یا نادانستہ غلطی پر امریکی ایکٹ کے تحت کارروائی ہو سکتی ہے۔

واشنگٹن پوسٹ نے وائٹ ہاؤس کی ای میلز کے غیر قانونی استعمال پر حکومتی موقف جاننے کے لیے اہم حکام سے رابطہ کیا تاہم ترجمان کی جانب سے موقوف دینے سے گریز کیا گیا۔

واضح رہے کہ سابق وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن پر بھی سرکاری ای میلز کے تبادلے کے لیے ذاتی ای میل اکاؤنٹ استعمال کرنے کا الزام سامنے آیا تھا جس پر صدرڈونلڈ ٹرمپ نے ہیلری کلنٹن کو بد دیانت قرار دیا تھا۔

News Code 1885790

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 0 =