افغانستان میں طالبان 17 سالہ جنگ کے بعد بھی کافی مضبوط

امریکہ کے چیئرمین جوائنٹ چیف آف اسٹاف جنرل جوزف ڈن فورڈ نے افغانستان میں 17 سالہ امریکی جنگ کیط رف شارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں طالبان ہارے نہیں بلکہ 17 سالہ جنگ کے بعد بھی اُن کی پوزیشن کافی مضبوط ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ کے چیئرمین جوائنٹ چیف آف اسٹاف جنرل جوزف ڈن فورڈ نے افغانستان میں 17 سالہ امریکی جنگ کیط رف شارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں طالبان ہارے نہیں بلکہ 17 سالہ جنگ کے بعد بھی اُن کی پوزیشن کافی مضبوط ہے۔ اطلاعات کے مطابق امریکہ کے چیئرمین جوائنٹ چیف آف اسٹاف جنرل جوزف ڈن فورڈ نے کہا ہے کہ افغانستان کے معاملے پر ہمیں لگی لپٹی بات کرنے کے بجائے طالبان کی مضبوط پوزیشن کو تسلیم کرلینا چاہیے اور فوجی آپریشن کے ساتھ ساتھ معاشی دباؤ اور مذاکرات کے ذریعے قیام امن کی کوششیں کرنی چاہیے۔

امریکی جنرل جوزف ڈن فورڈ نے کہا کہ امریکہ اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر طالبان اور کابل حکومت کے درمیان مذاکرات کے لیے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے اور اگر طالبان بات چیت کے لیے تیار ہوجائیں تو یہ ہماری بڑی کامیابی ہوگی۔ اس حوالے سے مثبت پیشرفت کے خواہاں ہیں تاہم اس میں کافی وقت لگے گا۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق امریکی فوجی جنرل کے اس بیان سے ثابت ہوگیا ہے کہ امریکہ کو افغانستان میں تاریخی ناکامی کا سامنا ہے۔

News Code 1885732

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 13 =