پاکستان کے سابق فوجی سربراہ مرزا اسلم بیگ  کے خلاف کارروائی کا آغاز

پاکستانی سپریم کورٹ کے حکم پر اصغر خان کیس میں ملوث سابق اعلیٰ فوجی افسران کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے جن میں پاکستانی فوج کے سابق چيف مرزا اسلم بیگ بھی شامل ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی سپریم کورٹ کے حکم پر اصغر خان کیس میں ملوث سابق اعلیٰ فوجی افسران کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے جن میں پاکستانی فوج کے سابق چيف مرزا اسلم بیگ بھی شامل ہیں۔ اصغر خان کیس کے حوالے سے سابق آرمی چیف جنرل (ر) اسلم بیگ کے وکیل سپریم کورٹ میں پیش ہوئے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت نے گزشتہ حکم نامے میں فوجی افسران کے حوالے سے سوال اٹھایا تھا، پوچھا تھا فوجی افسران کے خلاف کارروائی سول حکومت کرے گی یا فوج؟۔

سابق آرمی چیف جنرل (ر) مرز اسلم بیگ کے وکیل نے بتایا کہ آرمی ایکٹ کے تحت اسلم بیگ کے خلاف کارروائی ہو رہی ہے، سپریم کورٹ میں بھی کیس سماعت کے لیے مقرر ہے، کیا اسلم بیگ کا سماعت پر موجود ہونا لازم ہے؟۔ چیف جسٹس نے حکم دیا کہ کہ اسلم بیگ کو حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کریں، مقدمہ کی فائل دیکھے بغیر حاضری سے استثنیٰ کیسے دے سکتا ہوں۔

واضح رہے کہ چیف جسٹس  ثاقب ںثار نے اصغرخان کیس 15 اگست کو سماعت کے لئے مقرر کیا ہے۔ قبل ازیں مئی میں بھی سپریم کورٹ نے اصغر خان عملدرآمد کیس میں سابق آرمی چیف مرزا اسلم بیگ اور سابق ڈی جی آئی ایس آئی اسد درانی کی نظر ثانی درخواستیں مسترد کردی تھیں۔ عدالت نے 1990 کے انتخابات میں دھاندلی کےذمہ دار اعلیٰ سابق فوجی افسران کے خلاف کارروائی کا حکم بھی دیا تھا۔

News Code 1883031

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 1 =