چین میں مسجد کے انہدام کے فیصلے کے خلاف  مسلمانوں کا احتجاج

چین کےعلاقے نینگشیا میں جامع مسجد کے انہدام کے فیصلے کے خلاف ہزاروں مسلمان سراپا احتجاج بن گئے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چین کےعلاقے نینگشیا میں  جامع مسجد کے انہدام کے فیصلے کے خلاف ہزاروں مسلمان سراپا احتجاج بن گئے۔اطلاعات کے مطابق چین کے خود مختار علاقے نینگشیا کی مقامی حکومت نے جامع مسجد " ویزہوو"  کے انہدام کا فیصلہ کیا جس پر ہزاروں مسلمانوں نے جامع مسجد کے قریبی اسکوائر پر جمع ہو کر سڑک بلاک کردی اور حکومت مخالف نعرے لگائے۔ مقامی حکام  نے مظاہرین سے مذاکرات کے کئی دور کیے تاہم مظاہرین نے مسجد کو ہاتھ نہ لگانے کی یقین دہانی تک منتشر ہونے سے انکار کردیا۔شہری حکومت کے سربراہ نے وفاقی حکومت سے بات کرنے کے بعد مظاہرین کو تعمیراتی پروجیکٹ کی نئی منصوبہ بندی تک مسجد کے انہدام کے فیصلے کو مؤخر کرنے سے آگاہ کیا جس پر مظاہرین منتشر ہو گئے۔ادھر حکام کا کہنا ہے کہ مسجد کی تعمیر کے لیے درکار ضروری کاغذی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی  اور نہ ہی اجازت نامہ حاصل کیا گیا اس لیے یہ عمارت غیر قانونی طور پر تعمیر کی گئی ہے اور اسے منہدم کرنا قانون کی پاسداری کرنا ہے۔

News Code 1882948

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 8 =