فلسطینی سائنس داں کا قتل اسرائيلی خفیہ ایجنسی موساد کی کھلی دہشت گردی

فلسطینی تنظیم جہاد اسلامی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ملائشیا میں اسرائیلی خفیہ ایجنسی " موساد "‘ نے فلسطینی سائنس دان پروفیسر فادی محمدالبطش کو قتل کرکے کھلی دہشت گردی کا مظاہرہ کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے العہد کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ  فلسطینی تنظیم جہاد اسلامی نے ایک بیان میں  کہا ہے کہ ملائشیا میں اسرائیلی خفیہ ایجنسی " موساد "‘ نے فلسطینی سائنس دان پروفیسر فادی محمدالبطش کو قتل کرکے کھلی دہشت گردی کا مظاہرہ کیا ہے۔ جہاد اسلامی کا کہنا ہے کہ فادی البطش مخلص ، بہادر اور فلسطینی کے وفادار جوان تھے۔ فلسطینی تنظیم حماس نے کہا ہے کہ فادی البطش کے قتل میں اسرائیل کی خفیہ ایجنسی موساد ملوث ہے۔ کوالالمپور پولیس کے سربراہ مزلان لازم نے بتایا کہ موٹرسائیکل سوار 2 ملزمان نے فادی البطش  پر براہ راست فائرنگ کی، ملزمان نے مقتول پر 10 گولیاں فائر کیں جس میں سے 4 ان کے جسم میں پیوست ہوگئیں اور وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے۔ ملائیشیا کے ڈپٹی وزیراعظم کا کہنا ہے کہ مشتبہ ملزمان کا تعلق ایک غیر ملکی خفیہ ایجنسی سے ہے جب کہ ملائیشیا میں فلسطینی سفیر کے مطابق عینی شاہدین نے انہیں بتایا کہ فائرنگ کرنے والے ملزمان چہرے سے یورپی باشندے لگ رہے تھے۔

مقتول کے اہل خانہ نے بھی البطش کے قتل کا ذمہ دار موساد کو قرار دیا ہےاور ملائیشین حکومت سے مقتول کا جسد خاکی غزہ بھیجنے کی بھی اپیل کی ہے۔ ذرائع کے مطابق اسرائيل فلسطین کے اندر اور باہر فلسطینیوں کے خلاف کھلی جارحیت کا ارتکاب کررہا ہے۔

News Code 1880210

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 1 =