امریکہ کو شہید میجر جنرل سلیمانی کے قتل کا تاوان ادا کرنا پڑےگا

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ شہید میجر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے گا ، امریکہ کو شہید میجر جنرل سلیمانی کے قتل کا تاوان ادا کرنا پڑےگا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ  نے ہفتہ وار پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہید میجر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے گا ، امریکہ کو شہید میجر جنرل سلیمانی کے قتل کا تاوان ادا کرنا پڑےگا۔ خطیب زادہ نے کہا کہ شہید سلیمانی خطے میں پائدار امن وصلح کے قیام کا بہت بڑا رکن تھے وہ فوجی توانائیوں اور صلاحیتوں کے ساتھ ساتھ سیاست پر بھی مکمل کنٹرول رکھتے تھے۔ ہم شہید سلیمانی کے خون کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے۔ شہید قاسم سلیمانی کے قتل میں ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں لائیں گے اور انھیں ضرور سزا دی جائےگي۔

خطیب زادہ نے گذشتہ ہفتوں میں افغان رہنماؤں کے ساتھ گفتگو اور ملاقاتوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران افغانستان میں امن و صلح کا خواہاں ہے، ان ملاقاتوں ميں مذاکرات اور باہمی گفتگو کے ذریعہ مسئلہ افغانستان کو حل کرنے کے سلسلے میں تبادلہ خیال کیا گیا ۔ افغانستان کے صدر کے قومی سلامتی کے مشیر کا دورہ تہران بھی اسی سلسلے کی کڑی تھا ۔ افغانستان کے بحران کا راہ حل سیاسی ہے اور تمام افغان گروہوں کو گفتگو کے ذریعہ افغانستان کے بحران کو حل کرنے کی دعوت دی جاتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ایران اور افغانستان باہمی تعلقات کے ایک جامع معاہدے کے قریب پہنچ گئے ہیں۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بغداد میں امریکی سفارتخانہ پر راکٹ حملے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے نزدیک سفارتی جگہوں  اورشہری آبادی کو نشانہ بنانا مردود ہے اور ہم اس سلسلے میں امریکی صدر اور امریکی وزير خارجہ کے بیانات کو مسترد کرتے ہیں۔

News Code 1904573

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 7 =