بھارت میں 19 سالہ لڑکی نے ماں کو قتل کردیا

بھارت میں 19 سالہ طالبہ نے لڑکوں سے دوستی رکھنے پر منع کرنے اور ڈانٹ ڈپٹ سے ناراض ہو کر اپنی ماں کو قتل کردیا اور اس کا الزام اپنے والد پر لگانے کی کوشش کی۔

 مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارت میں 19 سالہ طالبہ نے لڑکوں سے دوستی رکھنے پر منع کرنے اور ڈانٹ ڈپٹ سے ناراض ہو کر اپنی ماں کو قتل کردیا اور اس کا الزام اپنے والد پر لگانے کی کوشش کی۔ اطلاعات کے مطابق حیدرآباد کے علاقے حیات نگر کی 19 سالہ لڑکی کیرتھی ریڈی نے پڑوس میں رہنے والے اپنے دوست ششی کے ساتھ مل کر اپنی ماں 38 سالہ راجیتھا کو گلا گھونٹ کر موت کے گھاٹ اتار دیا۔

سفاک بیٹی نے ماں کی لاش دو دن تک گھر میں چھپا کر رکھی اور اس دوران اپنے دوست کے ساتھ کئی بار جنسی تعلق استوار کیے۔ لاش سے بدبو آنے کے بعد ششی نے اپنے گاڑی میں لاش کو لے جا کر ریلوے پٹری پر رکھ دیا تاکہ حادثے کا گمان ہو۔ لاش ٹھکانے لگانے کے بعد وہ اپنے دوسرے دوست کے گھر قریبی گاؤں چلی گئی۔ ایک ہفتے بعد جب ٹرک ڈرائیور والد لوٹا تو گھر میں تالا تھا۔ پہلے بیوی کو فون کیا جو بند تھا پھر بیٹی کو فون کیا تو اس نے جھوٹ بولا کہ شہر گھومنے آئی ہوئی ہوں۔

پریشان باپ نے فوری آنے کی ہدایت کرتے ہوے بتایا کہ تمہاری ماں کا کچھ پتہ نہیں چل رہا ہے۔ کیرتھی نے گھر واپس آتے ہی پولیس کو بیان دیا کہ میرا والد ماں کو مارتا تھا اور اسی نے میری غیر موجودگی میں ماں کو قتل کیا ہے۔

پولیس تفتیش کے دوران والد کا ایک اور دوست ملنے آیا اور انکشاف کیا کہ کیرتھی کوئی شہر گھومنے نہیں گئی تھی بلکہ میرے گھر رکی ہوئی تھی کیوں بقول کیرتھی کے والدین ایک ہفتے کیلیے کہیں کام سے جا رہے ہیں۔

پولیس نے پوری کہانی سامنے آنے پر سفاک بیٹی کیرتھی، اس کے دو دوستوں بال ریڈی اور ششی کو حراست میں لے لیا جہاں اس نے ماں کو قتل کرنے کا اعتراف کرلیا۔

News Code 1894975

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 12 =