اسلامی تعاون تنظیم کا مقبوضہ جولان سے اسرائيل کے انخلاء کا مطالبہ

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے رکن ممالک نے سربراہی اجلاس کے اعلامیہ میں شام کے بحران کو مذاکرات کے ساتھ حل کرنے پر تاکید کرتے ہوئے مقبوضہ جولان علاقہ سے اسرائیل کی عقب نیشینی کا مطالبہ کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے روسیا الیوم کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی)  کے رکن ممالک نے سربراہی اجلاس کے اعلامیہ میں شام کے بحران کو مذاکرات کے ساتھ حل کرنے پر تاکید کرتے ہوئے مقبوضہ جولان علاقہ سے اسرائیل کی عقب نیشینی کا مطالبہ کیا ہے۔

اسلامی تعاون تنظیم کے اعلامیے کے مطابق فلسطین مسلم امہ کا بنیادی مسئلہ ہے،فلسطین سے عالمی قراردادوں کےمطابق اسرائیلی قبضہ ختم کرایاجائے،مقبوضہ بیت المقدس فلسطین کا دارالحکومت ہے،آزاد،خودمختارریاست میں زندگی بسر کرنا فلسطینیوں کا بنیادی حق ہے۔ جن ممالک نے اپنے سفارتخانے یا تجارتی مراکز بیت المقدس منتقل کئے ہیں اعلامیہ میں ان سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے سفارتخانہ واپس تل ابیب منتقل کریں۔ کیونکہ اس اقدام سے اشتعال انگیزی اور مشرق وسطی میں امن کی کوششوں کو نقصان پہنچےگا۔ 

اسلامی تعاون تنظیم نے سفاترخانہ بیت المقدس منتقل کرنے والے ممالک کے خلاف رکن ممالک سے کارروائی کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے تعاون تنظیم کے رکن ممالک نے جولان کو اسرائیل کے حوالے کرنے کے امریکیص در ڈونلڈ ٹرمپ کے اقدام کی مذمت کرتے ہوئے اسے رد کردیا ہے۔

News Code 1890999

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 16 =