پاکستانی حکومت کے خلاف توہین عدالت کی درخواست خارج

پاکستانی سپریم کورٹ نے ڈرون حملے نہ رکوانے پر پاکستانی حکومت کے خلاف توہین عدالت کی درخواست خارج کردی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی سپریم کورٹ نے ڈرون حملے نہ رکوانے پر پاکستانی حکومت کے خلاف توہین عدالت کی درخواست خارج کردی ہے۔ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے ڈرون حملے نہ رکوانے پر حکومت کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کی۔چیف جسٹس نے مقدمے کی تفصیلات کے بارے میں کہا کہ 2015 میں ڈرون حملے رکوانے کیلئے درخواست دی گئی تھی، جس پر پشاور ہائیکورٹ نے پہلے ڈرون حملے روکنے کا حکم دے دیا، حملے نہ رکے تو ہائیکورٹ نے توہین عدالت کیس میں کہہ دیا نہیں سن سکتے، کیا ہائیکورٹ ڈرون حملے روکنے کا حکم دے سکتی تھی؟، ہائیکورٹ نے امریکہ کو حکم دیا خبردار ڈرون حملے نہ کرو، یقینی تھا کہ امریکہ نے ہائیکورٹ کی کہاں سننا تھی، اب تو ویسے بھی ڈرون حملے رک چکے ہیں، ڈرون حملے رکوانا عدالت کا کام نہیں۔ سپریم کورٹ نے ڈرون حملے نہ رکوانے پر دائر توہین عدالت کی درخواست خارج کرتے ہوئے کہا کہ ڈرون حملے رکوانا قومی سلامتی اور وزارت خارجہ کی پالیسی سے تعلق رکھتا ہے۔

News Code 1890386

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 2 =