پاکستان میں وہابی دہشت گردوں کے صوفیائے کرام کے مزارات پر بزدلانہ حملوں کا سلسلہ جاری

پاکستان میں اولیاء اور صوفیائے کرام کے بیشمار مزارات ہیں جہاں ہزاروں افراد اپنی عقیدت پیش کرتے ہیں ان مزارات میں لاہور میں داتا گنج بخش کا مزار بھی شامل ہے جہاں ہزاروں پاکستانی مسلمان خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے حاضر ہوتے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں وہابی سنگدل دہشت گردوں کے اولیاء اور صوفیہ کرام کے مزارات پر بزدلانہ حملوں کا سلسلہ جاری ہے۔ پاکستان میں اولیاء اور صوفیائے کرام کے بیشمار مزارات ہیں جہاں ہزاروں افراد اپنی عقیدت پیش کرتے ہیں ان مزارات میں لاہور میں داتا گنج بخش کا مزار بھی شامل ہے جہاں ہزاروں پاکستانی مسلمان خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے حاضر ہوتے ہیں۔ لاہور میں 900 سال سےحضرت ابوالحسن علی بن عثمان علی ہجویری المعروف داتاگنج بخش کے مزار پر تقریباًروزانہ کی بنیادپرہزاروں افراد خراجِ عقیدت پیش کرتےہیں۔داتا گنج مزار پر دوباروہابی سنگدل دہشت گردوں نے حملہ کیا ہے۔ دوسرا حملہ بدھ کو کیا گیا جس میں 4 سکیورٹی اہلکاروں سمیت 10 افراد جاں بحق ہوگئے۔ وہابی دہشت گردوں کی جانب سے حملےسےیہ بالکل واضح ہوگیا ہےکہ ریاست کی جانب سےمسلسل انسدادِ دہشتگردی کےآپریشنزکےباوجودبےلگام وہابی تنظیمیں تاحال پاکستان کی قومی سلامتی کیلئےخطرہ ہیں۔ جولائی 2010 میں تقریباً نوسال قبل حضرت داتا گنج بخش کےمزارپردو خودکش حملہ آواروں نے حملہ کیا تھا،2010کےحملےمیں کم ازکم 50 افرادجاں بحق اور درجنوں زخمی ہوئےتھے۔ واضح طورپر جذبات سےمتاثرہوکریہ ظالم دہشتگرد تقریباً14  سالوں سےصوفی بزرگوں کےمزارات پرپاکستان  بھر میں مسلسل حملےکررہےہیں۔ تحقیق سے ظاہر ہوتا ہے کہ اِن نفرت کے تاجروں نےگزشتہ ایک دہائی میں ملک بھر میں تقریباً تین درجن مزارات کو نشانہ بنایا ہے، یہ مذہب کی مختلف تشریحات کو نافذکرنا چاہتے ہیں، جس کے نتیجے میں اب تک ہزاروں بےگناہ افراد مارے جا چکےہیں۔ سنٹرفاراسلامک ریسرچ کولیبوریشن اینڈ لرننگ کی جانب سے کی گئی تحقیق کے مطابق 2005سے2017کےدرمیان صوفی بزرگوں کے مزارات پرکیےگئےخونخوار وہابی دہشتگردوں کے حملوں میں 200سے زائد افرادمارے گئے اور تقریباً 600سےزائدزخمی ہوئے ہیں۔ پاکستان کی قومی سلامتی اور اتحاد و یکجہتی کو وہابی دہشت گردوں سے شدید خطرات لاحق ہوگئے ہیں دہشت گردوں کے خاتمہ سے قبل پاکستان کے اندر موجود دہشت گردانہ فکر کی تربیت دینے والے مدارس کے خلاف اقدام اور دہشت گردانہ فکر کا خاتمہ ضروری ہے ۔

News Code 1890379

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 2 =