افغانستان میں شہید مزاری کی برسی کی تقریب پر مارٹر حملے میں کم از کم 3 افراد جاں بحق

افغانستان کے دارالحکومت میں شہید مزاری کی برسی کی تقریب پر مارٹر حملے میں کم از کم 3 افراد جاں بحق جب کہ درجنوں زخمی ہوگئے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے طلوع نیوز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ افغانستان کے دارالحکومت میں شہید مزاری کی برسی کی تقریب پر مارٹر حملے میں کم از کم 3 افراد جاں بحق جب کہ درجنوں زخمی ہوگئے۔ افغان میڈیا کے مطابق کابل کے مغربی علاقے میں مصلائے مزار کمپاؤنڈ میں حزب وحدت اسلامی کے شہید رہنما عبدالعلی مزاری کی چوبیسویں برسی کی تقریب جاری تھی کہ کمپاؤنڈ پر یکے بعد دیگرے متعدد مارٹر گولے فائر کیے گئے۔ تقریب میں قومی حکومت کے چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ، سابق صدر حامد کرزئی،سابق مشیر قومی سلامتی امور حنیف اطمار، سابق نائب صدر یونس ، قائم مقام وزیر خارجہ صلاح الدین ربانی سمیت دیگر اہم شخصیات موجود تھیں۔ عبداللہ عبداللہ کا کہنا تھا کہ یہ حملہ افغانستان کے دشمنوں کی ایک واضح نشانی ہے، انہوں نے شرکاء سے تحمل کا مظاہرہ کرنے کی ہدایت کی۔ اس دوران مزید مارٹر ہال کے اطراف میں گرے جس کے بعد افراتفری مچ گئی اور تقریب کو منسوخ کردیا گیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس حملے میں کوئی اعلیٰ شخصیت زخمی  نہیں ہوئی تاہم 3 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوئے ہیں، وزارت داخلہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ  حملے کے بعد کمپاؤنڈ سے ایک مشکوک شخص کو گرفتار کیا گیا ہے۔ وزارت صحت کی جانب سے تصدیق کی گئی ہے کہ کمپاؤنڈ سے متصل گھروں پر مارٹر شیل لگنے سے نقصان پہنچا اور بعض لوگ زخمی ہوئے ہیں، جنہیں مقامی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

News Code 1888663

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 3 =