پاکستان اور بھارت کے درمیان جنگ کا سوچنا پاگل پن ہوگا

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان جنگ کا سوچنا پاگل پن ہوگا، ہمیں ماضی کی زنجیروں کو توڑ کر آگے بڑھنا ہوگا۔

مہر خبرساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان جنگ کا سوچنا پاگل پن ہوگا، ہمیں ماضی کی زنجیروں کو توڑ کر آگے بڑھنا ہوگا۔  عمران خان نے کرتارپور راہداری کا سنگ بنیاد رکھتے ہوئے کہا ہے کہ  انسان چاند پر پہنچ گیا لیکن ہم مسئلہ کشمیر حل نہیں کرسکے جب کہ ہمیں ماضی کی زنجیروں کو توڑ کر آگے بڑھنا ہوگا۔ کرتارپور راہداری کی تقریب میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی، بھارتی پنجاب کے وزیر نوجوت سنگھ سدھو اور وفاقی وزرا سمیت دیگر سیاسی وعسکری قیادت نے شرکت کی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے تمام سکھ برادری کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ آج بھارت سمیت دنیا بھر سے آئے ہوئے ہر چہرے پر خوشی دیکھ رہا ہوں، اگلے سال جب سکھ برادری بابا گرونانک کے جنم دن پر یہاں آئے گی تو انہیں تمام تر سہولیات مہیا کی جائیں گی اور یہ کرتارپور انہیں بہتر انداز میں ملے گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں ماضی کی زنجیروں کو توڑ کر آگے بڑھنا ہوگا کیوں کہ اس کے بغیر ہم آگے نہیں بڑھ سکتے، جب فرانس اور جرمنی کے تعلقات بہتر ہوسکتے ہیں تو ہمارے کیوں نہیں ہوسکتے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے تمام سول وعسکری ادارے ایک صفحے پر ہیں اور ہم آگے بڑھنا چاہتے ہیں تاہم ہمارا مسئلہ صرف ایک ہے اور وہ کشمیر ہے، آج کے دور میں انسان چاند پر پہنچ گیا تو کیا ہم اپنا ایک مسئلہ نہیں حل کرسکتے، صرف ارادے کی ضرورت ہے، جس سے ہم اس مسئلے کو بھی حل کرسکتے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ بھارت سے مضبوط تعلقات چاہتا ہوں کیوں کہ برصغیرمیں دنیا کی سب سے زیادہ غربت ہے اور اگر ہمارے بارڈر کھل جائیں، تجارت شروع ہوجائے توغربت ختم ہوجائے گی، ہمارے بارڈرکھلنے سےغربت تیزی سے ختم ہوسکتی ہے جب کہ ہمیں صرف دونوں طرف سے مسائل حل کرنے والی قیادت چاہیے، ہندوستان ایک قدم آگے بڑھائے ہم دو قدم بڑھائیں گے۔عمران نے کہا کہ پاکستان اور بھارت جوہری ملک ہیں، اور دو جوہری ممالک میں جنگ تو کبھی نہیں ہوسکتی اور نہ یہ جنگ کوئی جیت سکتا ہے، پاک بھارت جنگ کا سوچنا بھی پاگل پن ہوگا۔

News Code 1886014

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 8 =