سعودی عرب اور کینیڈا میں سفارتی کشیدگی میں  شدت آگئی

سعودی عرب نے کینیڈا کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کرنے کے ساتھ کینیڈا جانے اور آنے والی اپنی تمام پروازیں معطل کردی ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے العربیہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب نے کینیڈا کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کرنے کے ساتھ  کینیڈا جانے اور آنے والی اپنی تمام پروازیں معطل کردی ہیں۔ سعودی عرب کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ سعودی عرب نے کینیڈا میں زیر تعلیم سعودی طلبہ کو بھی دوسرے ممالک منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ادھر کینیڈین وزیر خا رجہ کرسٹیا فری لینڈ نے سعودی عرب میں انسانی حقوق کے کارکنوں کی رہائی کے مطالبے کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین کے حقوق انسانی حقوق ہیں اورکینیڈا انسانی حقوق کے لیے آواز بلند کرتا رہے گا، خواہ یہ کینیڈا میں ہو یا دنیا میں کہیں بھی۔کرسٹیا فری لینڈ نے مزید کہا کہ سعودی طلبہ کو کینیڈا میں تعلیم سے روکنے کا عمل شرمناک ہو گا۔کینیڈین وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ تنازع اتنی تیزی سےکیوں بڑھا، سعودی عرب ہی جواب دے سکتا ہے، آرمرڈ وہیکلز کی ڈیل کا مستقبل کیا ہوگا، ریاض سےتفصیلات کا انتظار ہے۔ واضح رہے کہ کینیڈا نے انسانی حقوق کے کارکنوں کی سزا ختم کر کے رہائی کا مطالبہ کیا تھا جس کے جواب میں سعودی عرب نے کینیڈا سے اپنا سفیر واپس بلا لیا اور کینڈا کے سفیر کو ملک سے بے دخل کر دیا۔ ذرائع کے مطابق سعودی عرب دوسرے ممالک میں سیاسی، سفارتی اور حتی فوجی مداخلت کرتا ہے اور اپنے اوپر ذرا سی تنقید بھی برداشت کرنے کے لئے تیار نہیں۔ عراق، شام، لیبیا اور یمن میں سعودی عرب کی مداخلت نمایاں ہے۔

News Code 1882854

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 6 =