چین کا مسعود اظہر کو کالعدم قرار دینے سے متعلق رکاوٹ سے پیچھے ہٹنے کا عندیہ

امریکہ کے مسلسل مطالبے پر چین نے اقوام متحدہ کی 1267 پابندی کمیٹی کی طرف سے جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو کالعدم قرار دینے سے متعلق رکاوٹ سے پیچھے ہٹنے کا عندیہ دے دیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان اخبار کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ کے مسلسل مطالبے پر چین نے اقوام متحدہ کی 1267 پابندی کمیٹی کی طرف سے جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو کالعدم قرار دینے سے متعلق رکاوٹ سے پیچھے ہٹنے کا عندیہ دے دیا۔ سینئر پاکستانی حکام نے ڈان کو بتایا کہ چین مسعود اظہر کو کالعدم قرار دینے سے متعلق اپنے تکنیکی ہولڈ کو واپس لے سکتا ہے۔ ادھر چینی وزارت خارجہ کے ترجمان جینگ شوہانگ نے بیجنگ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم 1267 کمیٹی میں فہرست کے معاملے کو بات چیت اور مشاورت کے ذریعے حل کرنے کی حمایت کرتے ہیں اور میں سمجھتا ہوں کہ یہ سب سے زیادہ اراکین کی رائے ہے، دوسرا یہ کہ کمیٹی کے اندر ہی متعلقہ معاملے پر مشاورت جاری ہے اور کچھ پیش رفت حاصل ہوئی ہے، تیسرا یہ کہ میرا ماننا ہے کہ تمام فریقین کی مشترکہ کوششوں سے یہ معاملہ مناسب طریقے سے حل کیا جاسکتا ہے۔

خیال رہے کہ بھارت کی کی جانب سے 2016 سے مسعود اظہر کا نام اس فہرست میں چاہتا ہے لیکن 14 فروری کو بھارت کے زیر تسلط کشمیر کے علاقے پلوامہ میں سینٹرل ریزور پولیس فورس پر حملہ ہوا تھا، جس کی ذمہ داری جیش محمد نے قبول کرنے کا دعویٰ کیا تھا، جس کے بعد سے اس مطالبے میں تیزی آگئی ہے۔ اس سلسلے میں اقوام متحدہ کے سیکیورٹی کونسل کے مستقل اراکین امریکا، برطانیہ اور فرانس نے بھارتی قرار داد کی حمایت کی تھی لیکن چین نے چوتھی مرتبہ تکنیکی طور پر اس کو روک دیا تھا۔

News Code 1890160

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 12 =