سری لنکا میں 8 بم دھماکوں میں 207 افراد ہلاک، 450 سے زائد زخمی

سری لنکا میں عیسائیوں کےایسٹر تہوار کے موقع پر گرجا گھروں اور ہوٹلوں پر 8 بم دھماکوں کے نتیجے میں 600 زائد افراد ہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سری لنکا میں عیسائیوں کےایسٹر تہوار کے موقع پر گرجا گھروں اور ہوٹلوں پر 8  بم دھماکوں کے نتیجے میں 600 سے زائد افراد ہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔اطلاعات کے مطابق سری لنکا کے 3 گرجا گھروں اور 3 ہوٹلوں میں ہونے والے 8 دھماکوں کے نتیجے میں اب تک  207 افراد ہلاک اور 450 سے زائد زخمی ہوگئے جب کہ ملک بھر میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق سری لنکا کے دارالحکومت کولمبو سمیت مختلف شہروں میں گرجاگھروں اور ہوٹلوں میں 8 بم دھماکوں کے نتیجے میں 207 افراد ہلاک جب کہ 450 سے زائد زخمی ہوگئے، ریسکیو اداروں نے زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا جب کہ عوام سے خون کے عطیات دینے کی اپیل کی گئی ہے۔سری لنکن صدر متھری پالا سری سینا نے عوام سے صبر و تحمل اور حکومت سے تعاون کرنے کی اپیل کرتے ہوئے صبح 6 بجے سے شام 6 بجے تک کرفیو نافذ کر دیا ہے جب کہ 22 اور 23 اپریل کو ملک بھر میں عام تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے۔ حکام کے مطابق ملکی صدر نے یہ اقدام ممکنہ احتجاجی مظاہروں اور امن عامہ کی صورت حال پر قابو پانے کے لیے اُٹھایا ہے۔

سری لنکن حکام کے مطابق ملک کے مختلف علاقوں میں 8 مقامات پر بم دھماکے کیے گئے جن میں کولمبو کے 3 ہوٹلز اور ایک چرچ جب کہ باٹی کالوا اور کاٹوواپٹیا شہر میں بھی ایک ایک چرچ کو نشانہ بنایا گیا، ایسٹر کے تہوار کے باعث گرجا گھروں اور ہوٹلوں میں رش ہونے کی وجہ سے زیادہ جانی نقصان ہوا۔ اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے اور سیکیورٹی اداروں کو الرٹ کردیا گیا ہے۔

سری لنکن پولیس کے مطابق دھماکوں کی جگہ کو گھیرے میں لیکر شواہد جمع کر لیے ہیں، دھماکے کی نوعیت کا تعین کرنے کے لیے تحقیقات جاری ہیں۔ اب تک کسی شدت پسند جماعت نے دھماکوں کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

News Code 1889891

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 13 =