پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے سینے پر نوجوان نے جوتا دے مارا

پاکستان کے سابق وویر اعظم اور حکمراں جماعت مسلم لیگ (نون) کے سربراہ نواز شریف لاہور میں جامعہ نعیمیہ میں ہونے والے سیمینار سے خطاب کے لیےجب اسٹیج پر آئے تو اگلی صف میں بیٹھے ایک نوجوان نے انہیں جوتا دے مارا جو سیدھا نواز شریف کے سینے پر جا لگا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے سابق وویر اعظم اور حمکراں جماعت مسلم لیگ (نون) کے سربراہ نواز شریف نے لاہور میں جامعہ نعیمیہ میں ہونے والے سیمینار میں شرکت کی۔ تقریب میں اس وقت شدید بدمزگی پیدا ہوگئی جب نواز شریف خطاب کے لیے ڈائس پر آئے تو اگلی صف میں بیٹھے ایک نوجوان نے انہیں جوتا دے مارا جو سیدھا نواز شریف کے سینے پر جا لگا۔ اچانک ہنگامہ آرائی سے نواز شریف شدید بوکھلاہٹ اور گھبراہٹ کا شکار ہوگئے جب کہ انہوں نے دونوں ہاتھ آگے لاکر مزید حملوں سے بچنے کی بھی کوشش کی۔ نواز شریف کے ہمراہ اسٹیج پر موجود لوگ بھی انتہائی پریشان ہوگئے اور شور شرابا ہوگیا۔ انتظامیہ نے فوری طور پر کارروائی کرتے ہوئے جوتا پھینکے والے نوجوان کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کردیا ۔ واقعے کی وجہ سے سیمینار میں شدید بدمزگی پیدا ہوگئی۔ نواز شریف بھی انتہائی مختصر سا خطاب کرکے واپس روانہ ہوگئے جبکہ تقریب کو بھی وقت سے پہلے ختم کردیا گیا۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف پر ایک سے زائد جوتے پھینکے گئے اور جوتے پھینکنے والے جامعہ نعیمیہ کے فارغ التحصیل طلبہ ہیں۔ پولیس نے جوتے پھینکنے کے الزام میں تین افراد کو گرفتار کیا ہے جن کے نام عبدالغفور اور ساجد ہیں۔ ملزمان کو قلعہ گجر سنگھ پولیس نے اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز سیالکوٹ میں بھی ایک تقریب سے خطاب کے دوران مسلم لیگ نون کے وزیر خارجہ خواجہ آصف کے منہ پر ایک نوجوان نے سیاہی پھینک دی تھی۔

News Code 1879292

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 7 =