عالم اسلام میں سعودی عرب کی حیثیت خاک میں مل گئی ہے

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کی قومی سکیورٹی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے سربراہ نے بحرین میں سعودی عرب کے ہولناک جرائم ، قرآن سوزی، مسجدوں اور مقدس مقامات کی بے حرمتی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کے غیر انسانی و غیر اخلاقی اوروحشیانہ اقدامات سے عوام میں انتقامی جذبات کو فروغ ملےگا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو میں اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کی قومی سکیورٹی  اور خارجہ پالیسی کمیشن کے سربراہ علاء الدین بروجردی نے بحرین میں سعودی عرب کے ہولناک جرائم و قرآن سوزی، مسجدوں اور مقدس مقامات کی بے حرمتی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کے غیر انسانی و غیر اخلاقی اوروحشیانہ اقدامات سے بحرینی عوام اور عام مسلمانوں میں انتقامی جذبات کو فروغ ملےگا۔ انھوں نے کہا کہ مسجدوں  اور مقدس مقامات کی تخریب سعودیوں کی بالکل غلط پالیسی ہے جس کے سنگين نتائج برآمد ہونگے۔ بروجردی نے کہا کہ بحرینی اور سعودی حکومت نے لؤلؤ اسکوائر کو تخریب کرکے ہر بحرینی کے دل میں ایک لؤلؤ اسکوائر بنادیا ہے لؤلؤ اسکوائر اب ایک علامت بن گیا ہے جس کے ظاہری نقشہ کو سعودی اور بحرینیوں نے تخریب کردیا ہے لیکن اس کے باطنی اثرات پہلے سے کہیں زیادہ مؤثر اور مفید ثابت ہونگے بروجردی نے کہا کہ سعودیوں کی طرف سےقرآن سوزی اور مسجدوں کی تخریب کے خلاف مسلمانوں کو آواز بلند کرنی چاہیے کیونکہ سعودی حکام اسلامی قوانین کے پابند نہیں ہیں وہ اپنے مغربی آقاؤں کو خوشحال کرنے کے لئے مسلمانوں کا قتل عام کررہے ہیں اور اسلام کے ماتھے پر ایک بدنما داغ بنے ہوئے ہیں انھوں نے کہا کہ سعودی فوجیوں نے بحرین میں قرآن پاک کی اسی طرح بے حرمتی کی ہے جس طرح امریکی پادری نے امریکہ میں قرآن کی بے حرمتی کی ہے اور ایسی خبروں کو سن کر دل پاش پاش ہوجاتا ہے انھوں نے کہا کہ سعودی عرب کے ان اقدامات سے سعودیوں کا مکروہ چہرہ عالم اسلام کے سامنے واضح ہوگیا ہے کہ سعودی قرآن اور مسجدوں کے بھی دشمن ہیں بروجردی نے کہا کہ سعودیوں کی حیثیت اب خاک میں مل گئی ہے۔ واضح رہے کہ بحرین میں سعودی فوجیوں نے کئی مسجدوں کو منہدم کرکے وہاں قرآن مجید کے نسخوں کی بے حرمتی کی ہے۔ سعودی عرب کے درندہ صفت فوجیوں کے ہولناک جرائم کا سلسلہ بحرین میں جاری ہے لیکن بحرین کے نہتے عوام بھی اپنا احتجاج جاری رکھے ہوئے ہیں بحرینی عوام بحرین میں جمہوریت کا مطالبہ کررہے ہیں۔

News Code 1288485

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 8 =