امریکی خواتین کو بانجھ بنانے والا پاکستانی ڈاکٹر گرفتار

امریکہ میں خواتین کو اُن کی مرضی کے بغیر آپریشن کرکے بانجھ بنانے والے پاکستانی ڈاکٹر جاوید پرویز کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کردیا گیا ہے۔

مہر خبررسان ایجنسی نے بی بی سی کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ میں خواتین کو اُن کی مرضی کے بغیر آپریشن کرکے بانجھ بنانے والے پاکستانی ڈاکٹر جاوید پرویز کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کردیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق امریکی ریاست ورجینیا میں درجنوں خواتین کو بغیر اجازت لیے سرجری کے ذریعے بانجھ بنانے والے 69 سالہ پاکستانی نژاد امریکی ڈاکٹر جاوید پرویز کو 8 نومبر کو حراست میں لیا گیا تھا اور آج ایف بی آئی نے چارج شیٹ کے ساتھ ملزم کو عدالت میں پیش کردیا۔

امریکی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کی پیش کردہ چالان شیٹ میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ ڈاکٹر جاوید پرویز نے بطور ماہر امراض نسواں خواتین مریضوں سے جھوٹ بولا کہ انہیں کینسر ہوگیا ہے اس لیے آپریشن ناگزیر ہے، اس طرح دھوکے سے غیر ضروری آپریشن کرکے درجنوں خواتین کو بانجھ کردیا ۔

عدالت میں ڈاکٹر جاوید پرویز کے وکیل بھی موجود تھے تاہم انہوں نے ایف بی آئی اے کی جانب سے لگائے گئے الزامات کا جواب نہیں دیا۔ 8 نومبر سے زیر حراست ڈاکٹر جاوید پرویز پر اب تک 126 سے زائد خواتین اجازت کے بغیر غیر ضروری سرجری کرنے کی شکایات درج کروا چکی ہیں۔

ڈاکٹر جاوید پرویز نے 2014ء سے 2018ء کے درمیان 510 مریضوں میں سے 40 فیصد خواتین کے بچہ دانی کا آپریشن، مستقل مانع حمل، ڈائلیشن اور کیوریٹج جیسی سرجریاں کیں۔ ہر خاتون کے تقریباً 2 بار آپریشن کیے گئے اور یہ تمام وہ خواتین تھیں جن کے طبی اخراجات حکومت اٹھاتی ہے۔

News Code 1895437

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 3 =