کراچی میں چینی قونصل خانے پر حملے میں ملوث 2 سہولت کار گرفتار

پاکستان کے شہر کراچی میں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے چینی قونصل خانے پر حملے میں ملوث 2 سہولت کاروں کو حراست میں لے لیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے شہر کراچی میں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے چینی قونصل خانے پر حملے میں ملوث 2 سہولت کاروں کو حراست میں لے لیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق چینی قونصل خانے پر حملے کے ایک سہولت کار کو کراچی اور دوسرے کو سندھ کے شہر شہداد پور سے حراست میں لیا گیا۔ حراست میں لیے گئے ملزمان سے تحقیقات کی جارہی ہیں۔ شہداد پور سے گرفتار ملزم سے تحقیقات کیلیے کراچی سے اعلیٰ سطح کی ٹیم روانہ ہوگئی ہے۔ زیر حراست شخص کو کراچی منتقل کیاجائے گا۔ چینی قونصل خانے پر حملے کا مقدمہ ایس ایچ او کلفٹن محمد اشفاق کی مدعیت میں تھانہ سی ٹی ڈی میں درج کرلیا گیا ہے جس میں قتل، دہشت گردی، بارودی مواد سمیت دیگر دفعات شامل کی گئیں ہیں۔ مقدمے میں ہلاک دہشتگردوں آزل، رازق اور رئیس بلوچ ، ان کے 11 سہولت کاروں اور دیگر ملزمان کو نامزد کیا گیا ہے۔

ایف آئی آر کے متن کے مطابق ہلاک دہشتگردوں کا تعلق بلوچ لبریشن آرمی سے ہے۔ سہولت کار اسلم اچھو، نوربخش مینگل، کریم مری، کمانڈر نثار، کمانڈر شریف، آغا شیر دل، کمانڈر گیندی، رحمان گل، ہیر بیار مری، میرک بلوچ، بشیر زیب اور کمانڈر منشی کے نام شامل ہیں۔ ہلاک دہشتگرد حملے کے دوران مفرور ملزمان سے رابطے میں تھے۔

گزشتہ روز کراچی کے علاقے کلفٹن میں 3 دہشتگردوں نے چینی قونصل خانے پر حملہ کیا تھا جس میں دو اہلکار اور دو شہری جاں بحق ہوگئے تھے۔ سکیورٹی اہل کاروں کے جوابی کارروائی میں تینوں دہشتگرد بھی مارے گئے تھے۔

News Code 1885890

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 0 =