پاکستانی کابینہ کا صدر نیشنل بینک کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ

پاکستانی وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں صدر نیشنل بینک کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مہر خـررساں ایجنسی نےایکسپریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں صدر نیشنل بینک کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اہم اجلاس ہوا جس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ کابینہ کے اجلاس میں بنیادی ایجنڈا پی ٹی آئی کے 100 دن کے پلان کےعملدرآمد کا جائزہ لینا تھا جب کہ نیب کے قانون کو موثر بنانے کیلیے ترامیم کا فیصلہ کیا گیا ہے اور ان ترامیم کے لیے وزیرقانون فروغ نسیم کی سربراہی میں ٹاسک فورس بنادی گئی ہے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اجلاس میں سی پیک کا ریویو کیا گیا، سی پیک کے 28 ارب کے پراجیکٹ جاری ہیں جب کہ سول قانون میں ترمیم کیلیے ٹاسک فورس قائم کی گئی ہے اور ایک کروڑ نوکریاں اورپچاس لاکھ گھروں کے لیے بھی ٹاسک فورس بنادی ہے جس کے لیے 90 دن کا ٹائم مقرر کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام پراجیکٹس کے لیے ایک ایک کمیٹی بنائی گئی ہے۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ چیئرمین نیشنل بینک کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا کیوں کہ وہ سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے ساتھ منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں جب کہ  جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کے لیے کمیٹی قائم کردی گئی ہے جس میں شاہ محمود قریشی اور خسرو بختیار شامل ہیں۔

News Code 1883470

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 9 =