ہندوستانی رکن اسمبلی اسد الدین اویسی پر قاتلانہ حملہ ناکام/ دو ملزم گرفتار

ہندوستان کی سیاسی جماعت مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اور رکن اسمبلی اسد الدین اویسی کی گاڑی پر مسلح افراد نے فائرنگ کی، جس میں وہ خوش قسمتی سے محفوظ رہے۔ حملہ آور افراد کا تعلق حکمراں جماعت بی جے پی سے بتایا جاتا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ہندوستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہندوستان کی سیاسی جماعت مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اور رکن اسمبلی اسد الدین اویسی کی گاڑی پر مسلح افراد نے فائرنگ کی، جس میں وہ خوش قسمتی سے محفوظ رہے ۔ بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق اسد الدین اویسی کی گاڑی پر فائرنگ اُس وقت ہوئی جب وہ اترپردیش میں الیکشن مہم مکمل کر کے دہلی واپس آرہے تھے۔ پولیس حکام کے مطابق فائرنگ میں اسد الدین اویسی مکمل محفوظ رہے۔ حملہ آور افراد کا تعلق حکمراں جماعت بی جے پی سے بتایا جاتا ہے۔ پولیس نے اس حملے میں ملوث 2 ملزموں کو گرفتار کرلیا ہے۔ بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اسد الدین اویسی نے کہا کہ " میں میرٹھ سے دہلی جارہا تھا کہ چھجرسی ٹول پلازہ کے قریب تین سے چار مسلح افراد میری گاڑی کے قریب آئے اور انہوں نے تین چار فائر کیے"۔ اسد الدین اویسی نے کہا کہ فائرنگ سے میری گاڑی کے ٹائر پنکچر ہوگئے، واقعے کے بعد میں دوسری گاڑی میں بیٹھ کر محفوظ مقام پر پنہچ گيا۔

News Code 1909729

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha