بھارت میں دو ہندو بہنوں نے چار بیگھہ زرعی زمین عیدگاہ کے لیے عطیہ کردی

بھارت میں اپنے آنجہانی والد کی خواہش پوری کرتے ہوئے دو ہندوبہنوں نے اُن کی چار بیگھہ زرعی زمین عیدگاہ کے لیے عطیہ کردی۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی میڈیا کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارت میں اپنے آنجہانی والد کی خواہش پوری کرتے ہوئے دو ہندوبہنوں نے اُن کی چار بیگھہ زرعی زمین عیدگاہ کے لیے عطیہ کردی۔

اطلاعات کے مطابق برجنندن پرساد رستوگی، جن کا انتقال 20 سال قبل ہوا تھا، اُنہوں نے اپنے قریبی رشتہ داروں کو بتایا کہ وہ اپنی چار بیگھہ زرعی زمین عیدگاہ کی توسیع کے لیے عطیہ کرنا چاہتے ہیں۔

اپنے آنجہانی والد کی آخری خواہش کو پورا کرتے ہوئے، دو ہندو بہنوں نے بھارتی ڈیڑھ کروڑ سے زیادہ مالیت کی چار بیگھہ زمین عیدگاہ کے لیے عطیہ کی، اس نیک کام سے مسلمان اس قدر متاثر ہوئے کہ انہوں نے عید کے موقع پر ہندو شخص کے لیے دعا کی۔

دہلی اور میرٹھ میں رہنے والی ان کی دو بیٹیاں سروج اور انیتا کو حال ہی میں رشتہ داروں کے ذریعہ اپنے والد کی آخری خواہش کا علم ہوا۔

انہوں نے فوری طور پر کاشی پور میں رہنے والے اپنے بھائی راکیش رستوگی سے اس کے لیے رضامندی حاصل کرنے کے لیے رابطہ کیا اور وہ آسانی سے راضی ہو گئے۔

ادھر راکیش رستوگی نے بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ والد کی آخری خواہش کا احترام کرنا ہمارا فرض تھا، میری بہنوں نے کچھ ایسا کیا ہے جس سے ان کی روح کو سکون ملے گا۔ 

News Code 1910743

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 6 =