سعودی فوجی اتحاد یمن کے 43 ہزار شہریوں کے شہید اور زخمی ہونے کا ذمہ دار

یمن کی قومی نجات حکومت کی وزارت انسانی حقوق نے یمن پر سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ میں عظیم اور بڑے پیمانے پر ہونے والے نقصانات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کا اتحاد یمن کے 43 ہزار شہریوں کے شہید اور زخمی ہونے کا ذمہ دارہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اسپوٹنک کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ یمن کی قومی نجات حکومت کی وزارت انسانی حقوق نے یمن پر سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ میں عظیم اور بڑے پیمانے پر ہونے والے نقصانات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کا اتحاد یمن کے 43 ہزار شہریوں کے شہید اور زخمی ہونے کا ذمہ دارہے۔ یمن کی وزارت انسانی حقوق نے یمن پر سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ کے  1700 دنوں میں ہونے والے وسیع پیمانے پر نقصانات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ اور شہری آبادی پر بمباری کے نتیجے میں 80 ہزار بچے نفسیاتی بیماری میں مبتلا ہوگئے ہیں۔ یمن کی وزارت انسانی حقوق کے مطابق 24 ملین افراد کو فوری طور پر غذائی اور طبی امداد کی ضرورت ہے ۔ سعودی عرب کے محاصرے کی وجہ سے غذائی اور طبی اشیاء کی درآمد بند ہوگئی ہے۔ اقوام متحدہ کے ادارے کی جانب سے محدود پیمانے پر امداد ناکافی ہے۔ یمن کی وزارت انسانی حقوق کے مطابق سعودی عرب کے مظالم کی بنا پر یمن میں فقر 85 فیصد تک پہنچ گيا ہے جبکہ بے روزگاری 65 فیصد تک بڑھ گئی ہے۔

News Code 1896380

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 2 =