ایران اب بھی مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل پیرا ہے، امانو

بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے سربراہ نے پھر سے تسلیم کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل پیرا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے سربراہ نے پھر سے تسلیم کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل پیرا ہے۔ عالمی جوہری توانائی ایجنسی کے ڈائریکٹر جنرل یوکیا امانو نے بورڈ آف گورنر کو اپنی تازہ رپورٹ پیش کردی جس میں دنیا بھر میں جوہری ہتھیاروں سے متعلق ہونے والی پیشرفتوں کا جائزہ لیا گیا ہے۔ رپورٹ میں ڈائریکٹر جنرل یوکیا امانوکا کہنا تھا کہ  ایران اب بھی عالمی قوتوں امریکہ، برطانیہ، روس، جرمنی، فرانس اور چین کے ساتھ مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل درآمد کر رہا ہے اور ایجنسی کو ایران کی جانب سے جوہری ہتھیاروں کی تیاری کے شواہد نہیں ملے ہیں۔

یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ یوکیا آمانو نے ایران کی جانب سے مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل کرنے کی بات کی ہے جبکہ اس سے قبل بھی بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی نے ایران کے جوہری پروگرام کے پر امن ہونے کی تائید کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایران اپنے وعدے پرعمل کر رہا ہے۔

گزشتہ برس امریکہ نے معاہدے سے دستبردار ہوکر معاہدے کی توسیع سے انکار کردیا تھا تاہم معاہدے کے دیگر فریقین نے معاہدے کو برقرار رکھنے پر اتفاق کیا تھا۔

News Code 1888584

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 12 =