بھارتی ریاست اتر پردیش میں حکمراں جماعت کو بڑا دھچکا

ہندوستانی ریاست اتر پردیش میں اسمبلی انتخابات کے اعلان کے ساتھ ہی سیاسی ہلچل میں تیزی آنے کے ساتھ حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی " بی جے پی" کی مشکلات میں شدید اضافہ ہو گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہندوستانی ریاست اتر پردیش میں اسمبلی انتخابات کے اعلان کے ساتھ ہی سیاسی ہلچل میں تیزی آنے کے ساتھ حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی  " بی جے پی" کی مشکلات میں شدید اضافہ ہو گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق یوگی ادتیہ ناتھ کابینہ کے اہم وزیر سوامی پرساد موریہ سمیت تین اراکین اسمبلی نے بی جے پی سے استعفیٰ دیتے ہوئے اپوزیشن کی بڑی جماعت سماج وادی پارٹی میں شامل ہونے کا اعلان کردیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق اترپردیش کے وزیراعلیٰ یوگی ادتیہ ناتھ کابینہ میں شامل وزیر برائے محنت و کوآرڈنیشن سوامی پرساد موریہ کے استعفیٰ کے بعد بی جے پی کے تین ارکان اسمبلی برجیش پرجاپتی، روشن لال ورما اوربھگوتی ساگر نے پارٹی کو الوداع کہتے ہوئے سوامی پرساد موریہ کی حمایت میں مستعفی ہونے کا اعلان کردیا ہے ۔سوامی پرساد موریہ سماجوادی پارٹی میں شمولیت اختیار کر چکے ہیں، جبکہ تینوں ارکان اسمبلی کے بھی جلد سماج وادی پارٹی میں شامل ہوجائیں گے ۔ ایک ساتھ پارٹی کے وزیر اور کئی ارکان اسمبلی کے استعفیٰ کو بی جے پی کے لئے شدید جھٹکا اور دھچکہ قرار دیا جا رہا ہے۔

News Code 1909476

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 1 =