ممبئی حملوں پر کانگریس نے فوج کو ایکشن سے روکا، مودی

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہےکہ بھارت دہشتگردوں سے نمٹنے کی نئی پالیسی پر عمل پیرا ہےتاہم ماضی میں ممبئی حملوں پر کانگریس نے فوج کو ایکشن سے روکا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہےکہ بھارت دہشتگردوں سے نمٹنے کی نئی پالیسی پر عمل پیرا ہےتاہم ماضی میں ممبئی حملوں پر کانگریس نے فوج کو ایکشن سے روکا۔ نوئیڈا میں عوامی جلسے سے خطاب میں مودی نے کہا کہ کانگریس کے دور حکومت میں بھارتی حکومت کو ممبئی حملوں کا فوری جواب دینا چاہیے تھا، ایسی اطلاعات ہیں کہ ہماری افواج اس وقت بھی دہشتگرد حملوں کا بدلہ لینے کےلئے تیار تھیں لیکن نئی دہلی نے اس وقت خاموشی اختیار کی اور فورسز کو کوئی ایکشن لینے کی اجازت نہیں دی گئی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ بھارت نئی پالیسی پر عمل پیرا ہے جب 2016 میں اڑی حملہ ہوا تو دہشتگردوں کو انکی اپنی زبان جو وہ سمجھتے ہیں اسی میں سرجیکل اسٹرائیک کرکے جواب دیا جودہشتگردوں اور ان کو سپورٹ کرنے والوں نے کبھی سوچا نہ تھا۔ مودی نےدعویٰ کیا کہ اس بار پڑوسی ملک نے سرحد کے ساتھ فورسز تعینات کی تو ہم نے فضائی راستہ اختیار کرکےدہشتگردوں کو انکے اپنے گھروں میں نشانہ بنایا، دہشتگرد اور انکے ماسٹرز اس طرح کے رد عمل کا تصور نہیں کر رہے تھے، ایئر اسٹرائیک 3 بجکر 30 منٹ پر کی گئی جس نے پاکستان کی نیندیں اڑادیں۔ مودی نے کہا کہ وہ تصور کررہے تھے کہ وہ بھارت پر حملے کریں گے، پروکسی جنگ کریں گے اور بھارت کوئی جواب نہیں دیگا اور اس کی وجہ2014سے پہلے کی حکومت کا رویہ تھا۔

News Code 1888725

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 1 =