امریکہ میں ارلی ووٹنگ کے عمل کا سلسلہ مکمل ہوگيا

امریکہ میں صدارتی انتخاب کے لیے ووٹنگ آٹھ نومبر کو ہو گی لیکن لوگوں کی آسانی اور انتخابی عمل میں پیچیدگیوں سے بچنے کے لیے 22 اکتوبر سے 4 نومبر تک ارلی ووٹنگ کا سلسلہ بھی جاری رہا جو اب مکمل ہوگيا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ میں  صدارتی انتخاب کے لیے ووٹنگ آٹھ نومبر کو ہو گی لیکن لوگوں کی آسانی اور انتخابی عمل میں پیچیدگیوں سے بچنے کے لیے  22 اکتوبر سے 4 نومبر تک ارلی ووٹنگ کا سلسلہ بھی جاری رہا جو اب مکمل ہوگيا ہے۔ امریکہ میں ارلی ووٹنگ کا سلسلہ لوگوں کو با آسانی ووٹ ڈالنے کا بھر پور موقع فراہم کرتا ہے، یہ طریقہ بنیادی طور پر اُن لوگوں کے ووٹ ضائع ہونے سے بچانے کےلیے ہے جو پولنگ کے روز ووٹ کاسٹ نہ کر سکتے ہوں۔ ارلی ووٹنگ میں جہاں ووٹ ڈالنا آسان ہے وہیں اسکا طریقہ کار بھی بے حد سادہ ہے۔عوام میں ارلی ووٹنگ کے عمل کی مقبولیت بڑھتی جارہی ہے اور اس میں پائی جانے والی آسانی میں لوگ گہری دلچسپی لے رہےہیں ۔
امریکی صدارتی انتخابات سے قبل ارلی ووٹنگ کے ذریعےلوگوں کی بڑی تعداد اپنا ووٹ کاسٹ کرتی ہے، جس سے عوام کو سہولت اور ووٹنگ سسٹم کو استحکام ملتا ہے۔
 اگرچہ ارلی ووٹنگ کی سہولت اُن افراد کے لیے شروع کی گئی تھی جو پولنگ کے دن کسی وجہ سے ووٹ کاسٹ نہ کر سکتے ہوں لیکن وقت کے ساتھ ساتھ اس سہولت سے وہ لوگ بھی فائدہ اٹھا رہے ہیں جو لمبی قطاروں سے بچنا چاہتے ہیں۔

News Code 1868108

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 0 =