خبر رساں ايجنسي كي بين الاقوامي سرويس كي رپورٹ كے مطابق گذشتہ دو ہفتوں ميں دنيائے اسلام كي دو مختلف جگہوں پر دو درد ناك حادثے رونما ہوئے ہيں كہ جنھوں نے عالم بشريت اور بالخصوص مسلمانوں كے عقل و شعور كو جھنجوڑ كر ركھديا ہے

سعودي عرب ميں القاعدہ كے دہشت گرد گروہ نے اپنے ايك وحشيانہ و غير انساني اور غير اخلاقي عمل ميں سعودي عرب ميں مقيم ايك امريكي باشندے كو اغوا كر كے اسكا سر قلم كرديا

ادھر عراق ميں بھي ابو مصعب زرقاوي سے وابستہ دہشت گردگروہ نے

      جنوبي كوريائي باشندے كو اغوا كر كے اسكا سر تن سے جدا كرديا ان دونوں وحشيانہ اقدام ميں جو بات مشترك اور قابل

توجہ ہے وہ يہ ہے كہ دہشت گرد گروہوں نے يہ دونوں غير انساني اقدام اسلام كے نام پر كئے ہيں اس سے پہلے فلوجہ ميں ايك دہشت گرد گروہ نے چھ شيعہ جوانوں كو گرفتار كركے انھيں بڑے ہي درد ناك طريقے سے قتل كردياتھا انھوں نے اپنے اس وحشيانہ عمل كي ويڈيو فيلم بنائي اور اسے اينٹر نيٹ پر بھي نشر  كيا 

در اصل دين اسلام اس قسم كے تمام وحشيانہ اقدام كي مذمت كرتا ہے ليكن افسوس كہ عراق كے سني علماء نے ان وحشيانہ

اقدام پر كوئي رد عمل ظاہر نہيں كيا اور ايسا معلوم ہوتا ہے كہ وہ دہشت گردوں كے وحشيانہ اعمال سے بالكل راضي ہيں در حقيقت دہشت گرد اسلام كے صلح آميز چہرے اور اس كے امن و سلامتي كے پيغام كو ظلم اور بر بريت كي شكل ميں پيش كرنا چاہتے ہيں     

News Code 90188

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 3 =