ايراني طلباء نے اقوام متحدہ كے سامنے ايك مظاہرے ميں عالمي برادري سے سكوت ختم كرنے كو كہا ہے

ايراني بعض طلباء نے اقوام متحدہ كے سامنے ايك مظاہرے ميں عالمي برادري اور اقوام متحدہ سے كہا ہے كہ وہ ايران كے اغواء ہونے والے چار سفارتكاروں كي تلاش ميں تعاون كريں اور اس سلسلے ميں سكوت ختم كريں

مہر خبررساں ايجنسي كے سياسي نامہ نگار كي رپورٹ كے مطابق  ايراني طلباء كي مختلف يونينز نے تہران ميں اقوام متحدہ كے سامنے ايك مظاہرے ميں عالمي برادري اور اقوام متحدہ سے كہا ہے كہ وہ ايراني چار سفارتكاروں كے مسئلے كو روشن كرنے كے لئے تلاش اور جد وجہد كريں اور اس سلسلے ميں سكوت ختم كرديں اور اسرائيلي حكومت پر دباؤ ڈاليں تا كہ وہ ايران كے ان چار سفارتكاروں كو آزاد كردے ياد رہے كہ 23 سال پہلے لبنان ميں ايران كے چار سفارتكاروں سيد محسن موسوي ، احمد متوسليان ، تقي رستگار مقدم اور كاظم اخوان كو اسرائيلي ايجنٹوں نے اغواء كرليا تھا اس كے بعد سے آج تك ان كي كوئي خبر نہيں ہے مہر كے نامہ نگار كے مطابق گذشتہ دس روز ميں طلباء كايہ دوسرا احتجاجي مظاہرہ ہے  

News Code 210744

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 11 =