اگر پاكستان كي سرزمين سے ہندوستان كے خلاف دہشتگرد كارروائياں جاري رہيں تو امن مذاكرات ميں ركاوٹ آ سكتي ہے

ہندوستاني وزيراعظم منموہن سنگھ نے كہا ہے كہ اگر پاكستان كي سرزمين سے ہندوستان كے خلاف دہشتگردي كي كارروائياں ہوتي رہيں تو امن مذاكرات ميں ركاوٹ آ سكتي ہے

مہر خبررساں ايجنسي نے ذرائع ابلاغ كے حوالے سے نقل كيا ہے كہ ہندوستاني وزيراعظم منموہن سنگھ نے واشنگٹن كے نيشنل پريس كلب ميں اپنے خطاب كے دوران كہا كہ اگر پاكستان كي سرزمين سے ہندوستان كے خلاف دہشتگردكارروائياں ہوتي رہيں تو امن مذاكرات ميں ركاوٹ آ سكتي ہے

منموہن سنگھ نے كہا كہ  ہماري حكومت پاكستان كے ساتھ تعلقات كي بہتري اور بحالي كے ليے ہر ممكن اقدامات كرنے كے ليے تيار ہے ہم مسئلہ كشمير سميت تمام معاملات كا قابلِ عمل حل نكالنے كے ليے تيار ہيں ليكن اگر پاكستان كي سرزمين ہمارے ملك كے خلاف دہشتگردي كي كارروائيوں كے ليے استعمال ہوتي رہي تو ان تمام معاملات كے حل ہونے كي فضا خراب ہو سكتي ہے

انھوں نےاپنے خطاب ميں ہندوستان اور امريكہ كے تعلقات پر بات كرتے ہوئے كہا كہ امريكہ كے ساتھ تعلقات بہتر بنانےميں ہندوستان كو بہت فائدہ ہوا ہے انھوں نے ان تعلقات كو مزيد مضبوط كرنے كي ضرورت پر زور ديا

مبصرين كا خيال ہے كہ امريكہ اور ہندوستان كے بڑھتے ہوئے روابط سے جس طرح پاكستان كوتشويش ہے اسي طرح چين كو بھي تشويش ہے اور امريكہ جب بھي كسي ملك كےساتھ دوستي كا ہاتھ بڑھاتا ہے تووہ اپنے منافع اور علاقائي نشيب و فراز كو سامنے ركھ كر ايسا كرتا ہے

 

News Code 209135

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 0 =