كوفي عنان نے سلامتي كونسل كي موجودہ حالت كو غير جمہوري قرار ديتے ہوئے اسكي توسيع پر تاكيد كي ہے

كوفي عنان نے ايك بار پھرسلامتي كونسل كي توسيع پر تاكيد كي ہے اور 2005 كو اس كام كے لئے بہترين فرصت قرار ديا ہے

مہر خبررساں ايجنسي نے اخبار لومونڈ كے حوالے سے نقل كيا ہے كہ اقوام متحدہ كے سكريٹري جنرل نے سلامتي كونسل كے اجلاس ميں سلامتي كونسل كے 15 اركان ميں توسيع دينے كي ضرورت پر زور ديا ہے كوفي عنان نے كہا كہ اگر چہ امريكہ نے متنبہ كيا ہے كہ يہ وقت اصلاحات كے لئے منسب نہيں ہے ليكن اس صورت حال پر باقي رہنا بھي جمہوريت كے سراسر خلاف ہے لومونڈ كے مطابق كوفي عنان كي كوشش ہے كہ ستمبر ميں ہونے والے اقوام متحدہ كے عام اجلاس سے پہلے اصلاحات كے قابل قبول نتائج تك پہنچ جائے اور ادھرگروہ چار كي پيشنہادات كي بعض ممالك مخالفت كررہے ہيں جس سے اصلاحات كا عمل رك سكتا ہے  كوفي عنان نے كل جرمني ، ہند ، جاپان ، برازيل ، نائجيريا اور گينا كے وزراء خارجہ سے گفتگو كرتے ہوئے كہا كہ ہم سب اس بات كو قبول كرتے ہيں كہ سلامتي كونسل كو سب سے زيادہ جمہوري ہونا چاہيے اور اس كے اعضاء ميں اضافہ ہونا چاہئے اور اس وقت اقوام متحدہ ميں جمہوريت كے عمل كا فقدان ہے اور اس امركي اصلاح ہونا بہت ضروري ہے 

News Code 206409

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 1 =