عرب ممالک کے حکمرانوں کو اسرائیل کے وحشیانہ جرائم پر حق السکوت ملتا ہے

فلسطین کے ایک تجزیہ نگار کا کہنا ہے کہ اسرائیل کے وحشیانہ مظالم اور جرائم پر خاموش رہنے کے لئے عرب ممالک کے حکمرانوں کو حق السکوت ملتا ہے۔

مہر خبررساں اجنسی نے المعلومہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فلسطین کے تجزیہ نگارعبدالمجید السویلم  کا کہنا ہے کہ اسرائیل کے وحشیانہ مظالم اور جرائم پر خاموش رہنے کے لئے عرب ممالک کے حکمرانوں کو حق السکوت ملتا ہے۔عبدالمجید کا کہنا ہے کہ عرب ممالک کے حکمرانوں کو فلسطینیوں پر اسرائیل کے سنگين جرائم اور مظالم پر خاموش رہنے کے لئے حق السکوت اور رشوت ملتی ہے۔ فلسطینی تجزیہ نگار کے مطابق خلیج فارس کی عرب ریاستیں اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات بر قرار کررہی ہیں جبکہ یہی عرب ریاستیں فلسطینیوں پر اسرائیل کے سنگین جرائم پر خاموش تماشائي بنی ہوئی ہیں۔

عبدالمجید السویلم کا کہنا ہے کہ بعض عرب ممالک تو فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم کی حمایت کرتے ہیں اور بعض فقط زبانی مذمت کرتے ہیں۔ خلیج فارس کی عرب ریاستوں میں اسرائیل کے خلاف احتجاجی مظاہروں پر پابندی عائد ہے۔ انھوں نے کہا کہ خلیج فارس کی عرب ریاستوں میں یوم قدس اور فلسطینیوں کے ساتھ ہمدردی اور اظہار یکجہتی نہیں منایا جاتا ۔ انھوں نے کہا کہ اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کرنا عرب حکمرانوں کی اسلام اور مسلمانوں کے ساتھ بہت بڑی خیانت اور غداری ہے اور مسلمان عرب ممالک کے غدار حمکرانوں کو کبھی معاف نہیں کریں گے۔

News Code 1910690

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha