بھارتی سپریم کورٹ کا حجاب پرپابندی کے خلاف کیس کی جلد سماعت سے انکار

بھارت کی سپریم کورٹ نے حجاب پرپابندی کے خلاف کیس کی جلد سماعت سے انکارکردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ہندوستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارت کی سپریم کورٹ نے حجاب پرپابندی کے خلاف کیس کی جلد سماعت سے انکارکردیا ہے۔ بھارتی سپریم کورٹ نے ایک بارپھرہندوانتہاپسندوں کے لئے جانبداری کا مظاہرہ کرتےہوئےحجاب پرپابندی کے خلاف کیس کی جلد سماعت سے انکارکردیا۔ مسلمان طالبہ کی جانب سے حجاب پرپابندی کے خلاف کیس کی جلد سماعت کی درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ 28مارچ کوامتحانات شروع ہونے والے ہیں اس لئے کیس کی جلد سماعت کی جائے۔ بھارتی سپریم کورٹ نے درخواست مسترد کرتے ہوئے مسلمان طالبہ کے وکیل کو نہ صرف بات کرنے سے روک دیا بلکہ جانبدارانہ ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ  معاملے کوسنسنی خیز نہ بنائیں۔امتحانات کا حجاب پرپابندی سے کوئی تعلق نہیں۔ بھارتی ریاست کرناٹک کے تعلیمی اداروں میں حجاب پہن کرآنے پرپابندی عائد ہے۔کرناٹک کی ہائیکورٹ حجاب پرپابندی کے حق میں فیصلہ دے چکی ہے۔باحجاب مسلمان طالبات کوتعلیمی اداروں میں داخل نہ ہونے دینے کیخلاف بھارت  کے مختلف علاقوں میں احتجاج بھی کیا جاررہا ہے۔ بھارت میں مسلمانوں کے عقائد کے خلاف حکومتی اور عدالتی اقدامات پر مسلمانوں کو سخت تشویش لاحق ہے۔

News Code 1910267

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha

    تبصرے

    • zafar Iqbal IN 17:11 - 2022/03/25
      0 0
      سپریم کورٹ میں بھی آر ایس ایس بھر چکا ہے۔ بابری مسجد کے تعلق سے جس طرح انتہاپسند ہندوؤں کے حق میں فیصلہ آیا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ ساری دنیا کے لوگ سپریم کورٹ کا مکروہ چہرہ دیکھ لے۔ مجھے تو کوئی بہتری کی امید نہیں ہے۔