عرب ممالک پر اسرائیل کا خاموش قبضہ جاری/ اسرائیلی بحریہ کا اعلیٰ افسر بحرین میں تعینات

بحرین، متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب کے حکمرانوں کے مکروہ چہروں پر پڑے اسلامی نقاب اتر رہے ہیں اسرائیلی بحریہ نے اپنے ایک اعلی افسر کو بحرین میں تعینات کردیا ہے اس طرح عرب ممالک پر اسرائیل کا خاموش قبضہ کا سلسلہ جاری ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بحرین، متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب کے حکمرانوں کے مکروہ چہروں پر پڑے اسلامی نقاب اتر رہے ہیں اسرائیلی بحریہ نے اپنے ایک اعلی افسر کو بحرین میں تعینات کردیا ہے اس طرح عرب ممالک پر اسرائیل کا خاموش قبضہ کا سلسلہ جاری ہے۔

اطلاعات کے مطابق عرب ممالک کی تاریخ میں پہلی باربحرین میں اسرائیلی افسر کو تعینات کیا گیا ہے۔ یہ تعیناتی بحرین میں کی گئی ہے۔ بحرین نے اسرائیلی بحریہ کے اعلیٰ افسر کی تعیناتی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ تعیناتی خطے میں جہازوں کی آزادانہ نقل و حرکت کو یقینی بنانے کے لیے کی گئی ہے۔

عرب ممالک کی تاریخ میں پہلی بار اسرائیلی افسر کو تعینات کیا گیا ہے۔ عرب ممالک پر اسرائیل نے خاموش قبضہ شروع کردیا ہے۔ بحرین کی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی افسر کی تعیناتی خطے میں 34 سے زائد ممالک کے اتحاد کے ایجنڈے کے تحت کی گئی ہے۔ ادھر اسرائيل نے متحدہ عرب امارات سے بھی اپنے مطالبات مناونے کے لئۓ دباؤ قائم کررکھا ہے، اسرائيل نے امارات کو دھمکی دی ہے کہ اگر اس نے اسرائیل کے مطالبات کو تسلیم نہ کیا تو اسرائیل امارات کے لئے اپنی تمام پروازیں منسوخ کردےگا۔  ذرائع کے مطابق اسرائيل امارات اور بحرین کے بحری اور فضائی امور کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لینا چاہتا ہے۔ بحرین میں اسرائيل نے اپنا ایک اعلی بحری افسر تعینات کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق خلیجف ارس کی عرب ریاستوں کا وجود ختم ہونے کے قریب پہنچ گيا ہے۔

News Code 1909836

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 0 =