دہشت گردی بزدلانہ سوچ کا مظہر ہوتی ہے اور اس کا کوئي مذہب نہیں ہوتا

پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے سانحہ آرمی پبلک اسکول کی برسی کے موقع پر کہا ہے کہ آج کا دن آرمی پبلک اسکول کے ان بہادر اساتذہ کی یاد دلاتا ہے جو اپنے طالبِ علموں کی حفاظت کے لیے دہشت گردوں کے سامنے سیسہ پلائی دیوار کی طرح کھڑے ہوگئے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے سانحہ آرمی پبلک اسکول کی برسی کے موقع پر کہا ہے کہ آج کا دن آرمی پبلک اسکول کے ان بہادر اساتذہ کی یاد دلاتا ہے جو اپنے طالبِ علموں کی حفاظت کے لیے دہشت گردوں کے سامنے سیسہ پلائی دیوار کی طرح کھڑے ہوگئے۔ وقت نے ثابت کیا کہ بے شک دہشت گردی کا کوئی مذہب یا قوم نہیں ہوتی، اس کے پیچھے وہ بزدلانہ سوچ ہوتی ہے، جو اپنے ناپاک سیاسی عزائم کو پورا کرنے کے لئے نہتے کم سن پچوں کو بھی اپنی بہیمانہ کارروائی کا نشانہ بنا سکتی ہے تاہم آرمی پبلک اسکول کے شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں گئیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اس سانحہ کے بعد بہادر پاکستانی قوم کے حوصلے پست ہونے کے بجائے دہشت گردی کے خلاف مزید بلند ہوئے، پوری قوم متحد ہوئی اور ہم نے نیشنل ایکشن پلان کے تحت دہشت گردوں کو ان کے ٹھکانوں میں ڈھونڈ ڈھونڈ کر نشانہ بنایا، میں آج پوری قوم کو یہ یقین دلاتا ہوں کہ دہشت گرد پاکستانی قوم کے حوصلوں کو کبھی پست نہیں کرسکتے، پاکستان قوم کے عزم، حوصلے اور ہمت کو شر پسند عناصر نے جب بھی متزلزل کرنے کی کوشش کی، ان کو منہ کی کھانی پڑی۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ عہد کریں کہ پوری قوم متحد ہو کر فرقہ ورانہ، مذہبی اور نسلی تعصب پھیلانے والوں، تفرقہ پھیلانے والوں، اپنے ناپاک سیاسی عزائم کو پورا کرنے کے لئے ایسے ہتھکنڈے اپنانے والوں کے خلاف یونہی کھڑی رہے گی۔ عمران خان نے کہا کہ آج کا دن پوری پاکستانی قوم کو اس کرب ناک سانحہ کی یاد دلاتا ہے، جب بزدل شر پسند عناصر نے ہماری قوم کے مستقبل، نہتے کم سن بچوں پر حملہ کرکے انہیں شہید کیا ۔ ذرائع کے مطابق پاکستانی حکومت نے آج افغان طالبان کی وساطت سے انھیں دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات شروع کررکھے ہیں۔

News Code 1909163

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 4 =